کالعدم اہلسنت و الجماعت و کالعدم سپاہ صحابہ آج بھی نام بدل کر کام کر رہی ہیں، ثروت اعجاز قادری

کراچی: پاکستان سنی تحریک کے سربراہ محمد ثروت اعجاز قادری نے کہا ہے کہ نیشنل ایکشن پلان کے تحت کالعدم تنظیموں کی سرگرمیوں کو نہیں روکا گیا تو شدت پسندی جنم لے گی، وفاقی حکومت کالعدم تنظیموں کی سرگرمیوں پر تشویش کے بجائے روک تھام کیلئے قانونی اقدامات کرے، سندھ میں کالعدم تنظیمیں سر اٹھا رہی ہیں، صوبائی حکومت نوٹس لے، بی بی سی کے مطابق نیشنل کاؤنٹر ٹیررازم اتھارٹی نے سندھ کے محکمہ داخلہ کو تحریری طور پر اس تشویش سے آگاہ کیا ہے، کالعدم اہلسنت و الجماعت و کالعدم سپاہ صحابہ آج بھی نام بدل کر کام کر رہی ہیں، سندھ میں سرکاری اسکول اور قبرستانوں کی جگہ پر قبضہ کرکے مدارس بنائے گئے ہیں، جس کی نشاندہی نیکٹا اور نیشنل کاؤنٹر ٹیررازم اتھارٹی نے کیا ہے، مگر افسوس ہے کہ قانون کو حرکت میں نہیں لایا گیا، قومی ایکشن پلان پر عمل درآمد کو یقینی نہیں بنایا گیا تو انتہاپسندوں اور دہشتگردوں کو آکسیجن لینے کا موقع ملے گا، جو کسی طور بھی ملک کے امن کیلئے بہتر نہیں ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے بی بی سی کی رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کیا۔

ثروت اعجاز قادری کا کہنا تھا کہ کالعدم تنظیموں اور اور انتہاپسندی کے خاتمے کیلئے آرمی پبلک اسکول حملے کے بعد نیشنل ایکشن پلان بنایا گیا تھا، جس پر عمل درآمد سے دہشتگردی کے خاتمے میں بڑی کامیابیاں ملی ہیں، جس کا اعتراف دنیا کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی و صوبائی حکومت امن و امان کے بہتر اور دیرپا قیام کیلئے قومی ایکشن پلان کو اس کی روح کے مطابق عملی جامہ پہنائیں، دہشتگردی کے ناسور کو ختم کرکے ہی ملک کو آگے کی طرف لیجایا جا سکتا ہے، کالعدم تنظیموں کی نقل و حمل کو روکنے کیلئے قومی ایکشن پلان کی شق 7 پر مکمل عمل درآمد کیا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ کالعدم تنظیموں کی جاری سرگرمیوں پر عوام میں گہری تشویش پائی جا رہی ہے، یاد رہے کہ عوام نے آپریشن ضرب عضب اور اب دہشتگردی کے خلاف جاری آپریشن ردالفساد کی بھرپور حمایت کی ہے، عوام ملک میں مکمل امن اور دہشتگردی، جرائم و انتہاپسندی کا خاتمہ چاہتے ہیں، دہشتگردی کے خلاف جاری آپریشن میں پوری قوم پاک فوج کے ساتھ کھڑی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

نئے, صوبوں کی, بات کرنے والوں کو, کھری کھری, سناتے ہوئے

نئے صوبوں کی بات کرنے والوں کو کھری کھری سناتے ہوئے

کراچی: نئے صوبوں کی بات کرنے والوں کو کھری کھری سناتے ہوئے کہا کہ تبدیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے