ابوبکرالبغدادی جنگجووں کو چھوڑ کر فرار ہوگیا

بغداد: عراق میں انسداد دہشت گردی فورس کے آپریشنل چیف جنرل معن السعدی نے دعویٰ کیا ہے کہ شدت پسند گروپ داعش کے خود ساختہ خلیفہ ابو ابکر البغدادی جنگجوﺅں کو تنہا چھوڑ کر موصل سے فرار ہوگیا ہے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق جنرل معن السعدی نے بتایا کہ سیکیورٹی فورسز نے موصل میں الاصلاح الزراعی کالونی کو داعش سے چھڑا لیا ہے۔ یہ کالونی دہشت گردوں کا تزویراتی مرکز تھی اور وہ اسے اپنے جنگجوئوں کو یہاں مجتمع کرکے فوج کی پیش قدمی روکنے کی کوشش کررہے تھے اس کالونی پر عراقی فوج کے کنٹرول کے نتیجے میں داعش کو پسپائی کا سامنا کرنا پڑا ہے اور اس کی جنگ میں پہلی جیسی شدت نہیں رہی۔ ایک سوال کے جواب میں جنرل السعدی نے کہا کہ موصل میں شکست کے بعد داعش بدترین پھوٹ کا شکار ہے۔ داعش کے ہاتھ سے اس کا پہلا دارالحکومت چلا گیا ہے۔ داعش کے قبضے میں مغربی موصل کی بچ جانے والی کالونیاں بھی زیادہ دیر تک دہشت گردوں کے قبضے میں نہیں رہیں گی۔ داعش ایک کے بعد دوسری کالونی سے ہاتھ دھو رہے ہیں۔ موصل میں گھیرا تنگ ہونے کے بعد داعش عراق سے فرار کی راہ تلاش کررہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ داعشی خلیفہ ابو بکر البغدادی اپنے جنگجوئوں کو مرنے یا گرفتار ہونے کے لیے تنہا چھوڑ کر موصل سے فرار ہوگیا ہے۔ تاہم البغدادی کے اگلے ٹھکانے کا علم نہیں ہوسکا ہے۔ یہ اس بات کا بھی ثبوت ہے کہ داعش عراق سے شکست خوردہ ہونے کے بعد کسی دوسرے ملک میں دہشت گردی کی کارروائیاں کرے گی۔موصل میں جاری آپریشن کے ایک انچارج جنرل عبدالامیر یاراللہ نے جمعہ کے روز بتایا کہ سیکیورٹی فورسز نے شہر کے دائیں ساحلی علاقے کی الاصلاح الزراعی کالونی نمبر دو کو بھی داعش سے آزاد کرالیا ہے۔ الاصلاح کالونی نمبر ایک گذشتہ سے پیوستہ جمعہ کو داعش سے آزاد کرائی گئی تھی۔ جنرل یار اللہ نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ انسداد دہشت گردی فورسز نے اصلاح الزراعی کالونی میں تمام سرکاری عمارتوں پر عراقی پرچم لہرا دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

آل سعود کے جرائم پر دنیا میں صدائے اعتراض بلند

آل سعود کے جرائم پر دنیا میں صدائے اعتراض بلند

عالمی اداروں، تنظیموں اور سول سوسائٹی سے تعلق رکھنے والی نمایاں شخصیات نے سعودی عرب …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے