داعش کو ختم کرنا ہے تو پہلے طالبان کو ختم کرنا ہوگا، حامد کرزئی

کابل: سابق افغان صدر حامد کرزئی کا کہنا ہے کہ اگرداعش نے افغانستان میں اپنے قدم جمائے تو پھر پاکستان بھی محفوظ نہیں رہے گا، داعش کو ختم کرنا ہے تو پہلے طالبان کو ختم کرنا ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق کابل میں پاکستانی صحافیوں کے وفد سے ملاقات کے دوران حامد کرزئی کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان کے لیے مغربی ملکوں کی خواہش پر بنی پالیسی پرعمل نہ کرے، کسی بھی قربانی کے معاوضے میں دہشت گردی برداشت نہیں کی جاسکتی۔ امریکا نے افغانستان میں کارروائی کی توہم نے جانی نقصان کی مذمت کی، ملا فضل اللہ اگر اب افغانستان میں ہے تویہ جواب بھی دینا ہوگاکہ پہلے وہ کہاں تھا؟۔ سابق افغان صدر کا کہنا تھا کہ  میں عام افغان شہری کی حیثیت سے پاکستان جاوں گا، میں نے کبھی یہ نہیں کہا کہ افغانستان میں جو ہو رہا ہے وہ سب پاکستان کروا رہا ہے، افغانستان کے عوام کی پاکستانی میزبانی کو طویل عرصے فراموش نہیں کرسکتے۔

یہ بھی پڑھیں

بھارت کی مقبوضہ کشمیر کو فرقہ وارانہ بنیادوں پر تقسیم کرنے کی سازش

بھارت کی مقبوضہ کشمیر کو فرقہ وارانہ بنیادوں پر تقسیم کرنے کی سازش

سرینگر: بھارت کا مکروہ چہرہ ایک بار پھر بے نقاب ہوگیا، مقبوضہ کشمیر کو فرقہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے