فردوس عاشق اعوان کی بطور مشیر خاص تعیناتی کو کالعدم قرار دے کر کام کرنے سے روکا جائے

فردوس عاشق اعوان کی بطور مشیر خاص تعیناتی کو کالعدم قرار دے کر کام کرنے سے روکا جائے

لاہور: درخواست گزار کے وکیل نے عدالت میں مؤقف پیش کیا کہ فردوس عاشق اعوان کی بطور مشیر وزیراعلی پنجاب تعیناتی اعلیٰ عدلیہ کے فیصلے کی خلاف ورزی ہے

درخواست میں مؤقف اپنایا گیا کہ سپریم کورٹ نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف ریفرنس میں فردوس عاشق اعوان کا ذکر کیا، اور ان کے ریمارکس کو بھی توہین عدالت کے مترادف قرار دیا گیا، سپریم کورٹ کے 10 رکنی بنچ نے جسٹس قاضی فائز عیسی کیس کا فیصلہ سنایا تھا۔
درخواست گزار نے استدعا کی کہ وفاقی حکومت کو فردوس عاشق اعوان کے خلاف کارروائی کا حکم دیا جائے، اور ان کی بطور مشیر خاص تعیناتی کو کالعدم قرار دے کر کام کرنے سے روکا جائے۔
عدالت نے متفرق درخواست منظور کرتے ہوئے دستاویزات کو ریکارڈ کا حصہ بنانے کی اجازت دے دی، جب کہ کیس کی سماعت آئندہ پیر کے روز تک ملتوی کردی۔

یہ بھی پڑھیں

پی ڈی ایم اجتماعات کرونا کے پھیلاؤ کا سبب بن رہے ہیں

پی ڈی ایم اجتماعات کرونا کے پھیلاؤ کا سبب بن رہے ہیں

لاہور:جلسے کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں ایڈوکیٹ ندیم سرور نے درخواست دائر کی۔ درخواست میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے