حکومت فلم پالیسی کی تشکیل کے لئے پرعزم ہے، مریم اورنگزیب

کراچی: وفاقی وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ حکومت فلم پالیسی کی تشکیل کے لئے پرعزم ہے، جس کے لئے 4 ماہ سے کام جاری ہے۔ ملک میں سینما انڈسٹری کا قیام اچھی بات ہے۔ انہوں فلمی صنعت کی بہتری کے لیے پروفیشنل اکیڈمی بنانے کا اعلان بھی کردیا۔ وزیرمملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب کی صدارت میں سندھ کے گورنر ہاؤس میں فلم پالیسی مشاورتی اجلاس منعقد ہوا، جس میں انٹرٹینمنٹ انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے شرکت کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ فلم انڈسٹری جتنی ترقی کرے گا، ملک کے مسائل اتنے ہی کم ہوں گے۔ وفاقی حکومت فلم پالیسی کی تشکیل کے لئے پرعزم ہے اور ملک میں سینما انڈسٹری کاقیام اچھی بات ہے۔ حکومت 4 ماہ سے فلم پالیسی پر کام کر رہی ہے، فلموں اور سیاحت کی بدولت ملک کا مثبت امیج اجاگر ہو سکے گا۔
مریم اورنگزیب کا مزید کہنا تھا کہ وزیر اعظم نواز شریف فلم انڈسٹری کی بحالی چاہتے ہیں جبکہ اس کو زبوں حالی سے نکالنے کی کوشش کررہے ہیں، فلم ساز فلمیں بنانے کے لیے آلات درآمد کرنا چاہتے ہیں تو حکومت تعاون کرے گی۔ فلم انڈسٹری کے پھیلاﺅ سے ملک کی ثقافت اور ورثے کو فروغ ملے گا۔ اس اجلاس کا مقصد فلمی صنعت سے وابستہ افراد کی رائے حاصل کرنا ہے، جسے فلم پالیسی 2017 میں شامل کیا جائے گا۔ وفاقی وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس اداکاروں کی میراث ہے۔ کسی ایک کا نام لینا غیر مناسب ہوگا، مجھے سب بہت پسند ہیں، مجھے اداکار ہمایوں سعید بھی پسند ہیں، ماضی کے اداکاروں میں ندیم صاحب ہیں، میری والدہ ان کی فلمیں پسند کرتی تھیں۔ نئے اداکاروں کو بھی سراہانا چاہیے، ان کی وجہ سے دنیا بھر میں پاکستان کو پہنچانا جارہا ہے۔مریم اورنگزیب نے بتایا کہ انہوں نے آخری پاکستانی فلم ’جوانی پھر نہیں آنی‘ دیکھی تھی، اور یہ اتنی مزاحیہ فلم ہے کہ سب کو دیکھنی چاہیے۔

 

یہ بھی پڑھیں

اربوں روپے, کی منی لانڈرنگ, اور, بے نامی, اکاؤنٹس

اربوں روپے کی منی لانڈرنگ اور بے نامی اکاؤنٹس

کراچی: کسٹم عدالت کے روبرو امریکی ڈالرز بیرون ملک بھیجنے، اربوں روپے کی منی لانڈرنگ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے