سعودی سفارتخانے پر حملہ کرنے والے غداری کے مرتکب ہوئے، جواد ظریف

تہران: ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا ہے کہ تہران میں سعودی سفارت خانے پر حملہ ایک تاریخی حماقت اور حملہ آوروں کی جانب سے غداری تھی۔ تہران میں ایرانی یومِ معلّم کے موقع پر "بین الاقوامی تعلقات” کے کالج میں اساتذہ سے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ ہم نیوکلیئر معاہدے کے قریب پہنچ چکے تھے کہ دو اہم واقعات پیش آ گئے۔ ان میں پہلا سعودی سفارت خانے پر حملہ اور دوسرا خلیج میں دس امریکی فوجیوں کو قیدی بنانا۔  پہلے واقعے سے ہمارا نمٹنے کا طریقہ کار برا تھا جبکہ دوسرے معاملے سے اچھی طرح نمٹا گیا۔ایرانی وزیر خارجہ نے پہلی مرتبہ انکشاف کیا کہ ایرانی قومی سلامتی کونسل کو سعودی سفارت خانے کے خلاف حملے کی توقع تھی۔ ظریف نے باور کرایا کہ اگر یہ تاریخی حماقت جو کہ میرے نزدیک غداری ہے مرتکب نہ ہوتی تو آج حالات یکسر مختلف ہوتے۔

یہ بھی پڑھیں

شامی اور روسی فوجیں باز نہ آئیں تو ادلب میں بڑی کارروائی کریں گے، ترک صدر

شامی اور روسی فوجیں باز نہ آئیں تو ادلب میں بڑی کارروائی کریں گے، ترک صدر

انقرہ:  روس سے مذاکرات کی ناکامی کے بعد ترک صدر طیب اردوان نے ادلب میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے