سری لنکا کے جیلوں میں قید 44 پاکستانی شہریوں کو جلد وطن واپس لایا جائے گا

سری لنکا کے جیلوں میں قید 44 پاکستانی شہریوں کو جلد وطن واپس لایا جائے گا

اسلام آباد: سری لنکا میں سزا یافتہ قیدیوں کی مختلف میں مراحل واپسی پاکستان اور سری لنکا کے مابین 2004 میں مجرمان کی منتقلی کے معاہدے کے تحت ہوگی

معاہدے کے تحت ایسے کیسز میں مجرمان کی منتقلی کی اجازت ہے جن کی سزا 6 ماہ کی مدت سے زیادہ ہو، پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز کی ایک چارٹرڈ پرواز قیدیوں کو وطن واپس لائے گی۔
ایک عہدیدار نے کہا کہ آئندہ چند روز میں قیدی وطن واپس آجائیں گے تاہم سفارتی ذرائع کا کہنا تھا کہ قیدیوں کو منگل کے روز(آج) بندرانائیکے انٹرنیشنل ایئرپورٹ (بی آئی اے) پر پاکستانی جیل حکام کے حوالے کردیا جائے گا۔
دونوں ممالک کے مابین قیدیوں کے تبادلے کے معاہدے پر عملدرآمد کے لیے وزارت داخلہ نے مرکزی کردار ادا کیا۔
جس کا فیصلہ وزیر داخلہ کی جانب سے بلائے گئے ایک اجلاس میں کیا گیا تھا جو پاکستانی قیدیوں کی سری لنکا سے واپسی کے حوالے سے ہی تھا۔
29 اکتوبر کو ہونے والے اجلاس میں پرواز کے انتظام، قیدیوں کی تصدیق اور ان کی پاکستان محفوظ منتقلی کو حتمی شکل دی گئی تھی۔
ایک عہدیدار کا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں نادرا (نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی)، وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) پی آئی اے اور سول ایوی ایشن اتھارٹی کے مابین بین الادارہ جاتی تعاون جاری ہے۔
وزارت داخلہ مسلسل بیرون ملک پھنسے ہوئے پاکستانی قیدیوں کی واپسی کے اقدامات اٹھا رہی ہے اور اسی قسم کی ایک کوشش کے نتیجے میں 250 پاکستانی قیدی ملائیشیا سے واپس پہنچے تھے۔
قیدی رواں برس مئی میں ملائیشین ایئرلائن کی پرواز کے ذریعے علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ پہنچے تھے جہاں ان کی کورونا وائرس اسکریننگ کے بعد قرنطینہ مراکز میں منتقل کردیا گیا تھا۔
سری لنکا میں پاکستانی ہائی کمشنر نے حال ہی میں قیدیوں کو یقین دلایا تھا کہ حکومت دونوں ممالک کے درمیان قیدیوں کے تبادلے سے متعلق معاہدے پر عملدرآمد کے لیے فعال کردار ادا کررہی ہے۔
انہوں نے کہا تھاکہ طویل عرصے سے مقدمات کی سنوائی کے منتظر قیدیوں کہ قانونی کارروائی کو تیز کرنے کے لیے سری لنکن حکام سے بات کریں گے

یہ بھی پڑھیں

مچھلی ریفر کنٹینرز میں چین بھجوائی جائے گی

مچھلی ریفر کنٹینرز میں چین بھجوائی جائے گی

اسلام آباد: وزیراعظم کی ہدایت کے تحت گوادر بندرگاہ پر تجارتی سرگرمیاں شروع کرنے کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے