پنجاب آہستہ آہستہ کووڈ 19 کی دوسری لہر کی طرف بڑھ رہا ہے

پنجاب آہستہ آہستہ کووڈ 19 کی دوسری لہر کی طرف بڑھ رہا ہے

لاہور: سرکاری اعداد و شمار میں بتایا گیا کہ اتوار کو سامنے آئے اعداد و شمار کے مطابق صوبے بھر میں 203 افراد کے کورونا ٹیسٹ مثبت آئے، جو 15 اگست کے بعد رپوٹ ہونے والی کورونا کیسز کی سب سے زیادہ تعداد ہے

15 اگست کو پنجاب میں 210 افراد میں کورونا کی تصدیق ہوئی تھی جبکہ اتوار کو کووڈ 19 کے 5 مریضوں کی موت بھی رپورٹ ہوئی۔
لاہور ایک بار پھر ایک ایسے شہر کے طور پر ابھر رہا ہے جہاں وائرس کے تیزی سے پھیلنے کا خطرہ بہت زیادہ ہے کیونکہ 203 میں سے 106 کیسز لاہور، 16 ملتان اور 10 فیصل آباد میں سامنے آئے۔
صحت کے حکام نے رپوٹس کا حوالہ دیتے ہوئے خبردار کیا کہ آنے والے ہفتوں میں کیسز کی تعداد میں مزید اضافہ ہوسکتا کیونکہ سرکاری دفاتر، تعلیمی اداروں، پارکس، مارکیٹوں، بازاروں، سیاحتی مقامات اور شاپنگ مالز میں اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجرز (ایس او پیز) کی بدترین خلاف ورزیاں کی جارہی ہیں۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ حال ہی میں اسی خدشے کے باعث پنجاب حکومت نے صوبے کے 36 اضلاع میں 856 جگہ ’ مائیکرو اسمارٹ لاک ڈاؤن‘ لگایا جبکہ 7 ہزار 295 افراد کو ان کے گھروں میں ہی قرنطینہ کیا گیا، لاک ڈاؤن کی یہ تجویز کووڈ 19 کے ایک ہزار 235 کیسز کے مثبت آنے کے بعد کی گئی تھی۔
لاہور میں 520 اور راولپنڈی میں 166 مریضوں میں سے 177 کیسز مثبت آنے پر 2 مائیکرو اسمارٹ لاک ڈاؤن کی تجویز دی گئی۔
ایک سینئر افسر نے بتایا کہ پنجاب کی کابینہ کمیٹی ہنگامی بنیادوں پر پیر کو ایک اجلاس کرنے جارہی ہے تاکہ کورونا کی صورتحال کا جائزہ لیا جاسکے جبکہ اس اجلاس میں محکمہ صحت اپنی رپوٹ بھی پیش کرے گا۔
اچانک کورونا کے مثبت کیسز میں اضافے سے کورونا وائرس کی دوسری لہرپھیلنے کا خطرہ ہے، پنجاب حکومت اسمارٹ لاک ڈاؤن کی طرف جاسکتی ہے اور وائرس کے تیزی سے پھیلنے پر مکمل لاک ڈاؤن کا آپشن بھی موجود ہے، اس حوالے سے صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا جارہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

حمزہ شہباز کی گھر کے کھانے کی درخواست پر تحریری حکم جاری کر دیا

حمزہ شہباز کی گھر کے کھانے کی درخواست پر تحریری حکم جاری کر دیا

لاہور: احتساب عدالت کے ایڈمن جج جواد الحسن نے حمزہ شہباز کی درخواست پر 2صفحات …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے