جنوبی کوریا میں امریکی میزائل ڈیفنس سسٹم کو فعال کردیا گیا

سیئول: امریکی فوج کا کہنا ہے کہ جنوبی کوریا میں اس کا میزائل ڈیفنس سسٹم ’’تھاڈ‘‘ ابتدائی طور پر فعال ہوگیا ہے یعنی اب یہ حملہ آور میزائل کو تباہ کرنے کے لئے تیار ہے۔ اس متنازعہ میزائل ڈیفنس سسٹم کی تنصیب جنوبی کوریا میں گزشتہ ہفتے شروع کی گئی تھی جسے جزوی طور پر فعال (آپریشنل) کردیا گیا ہے تاہم اس کے مکمل آپریشنل ہونے میں مزید چند ماہ لگ جائیں گے۔ ترجمان امریکی فوج کے مطابق اس نظام کی مدد سے شمالی کوریا کی جانب سے ممکنہ میزائل حملوں کو ناکام بناتے ہوئے جنوبی کوریا کا دفاع کیا جا سکتا ہے۔

جنوبی کوریا میں اس میزائل نظام کی تنصیب کے خلاف مظاہرے جاری ہیں کیونکہ مقامی افراد اور جنوبی کوریا کی حزبِ اختلاف کا مؤقف ہے کہ اس نظام کی تنصیب سے شمالی کوریا کو حملے کی دعوت دے دی گئی ہے جس سے جنوبی کوریا میں رہنے والوں کی زندگیاں خطرے میں پڑ گئی ہیں۔

جنوبی کوریا میں ’’تھاڈ‘‘ کی تنصیب پر چین نے بھی اس احتجاج کیا ہے کیونکہ اس نظام کے ریڈار سے چین کے فوجی آپریشن کی سیکیوریٹی کے لیے مسائل پیدا ہوسکتے ہیں۔ گزشتہ روز دو امریکی بمبار طیاروں نے جنوبی کوریا کی فضائیہ کے ساتھ ایک جنگی مشق میں بھی حصہ لیا؛ البتہ امریکی فوج کے مطابق یہ ’’معمولی کی مشقیں‘‘ تھیں۔

یہ بھی پڑھیں

جو بائیڈن کا 2020 کے صدارتی انتخاب میں حصہ لینے کا اعلان

جو بائیڈن کا 2020 کے صدارتی انتخاب میں حصہ لینے کا اعلان

سابق امریکی نائب صدر جو بائیڈن نے 2020 میں ہونے والے صدارتی انتخاب میں حصہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے