مہنگائی کی شرح 11.24 فیصد تک جا پہنچی

مہنگائی کی شرح 11.24 فیصد تک جا پہنچی

اسلام آباد: ملک میں بنیادی اشیائے ضروریہ عوام کی پہنچ سے دور ہوگئیں، سبزی ، آٹا، چینی ،انڈے سب کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگیں ہیں

وفاقی ادارہ شماریات نے مہنگائی سےمتعلق تازہ اعدادوشمارجاری کر دیے، رواں ماہ کے پہلے ہفتے میں مہنگائی میں 1.24 فیصد اضافہ ہوا ، جس کے بعد ملک میں مہنگائی کی شرح رواں مالی سال کی بلند ترین سطح گیارہ اعشاریہ دو چار فیصد تک پہنچ گئی۔
وفاقی ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ حالیہ ہفتے میں چوبیس اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا، صرف چار میں کمی جبکہ تیئیس میں استحکام رہا۔
اعدادو شمار کے مطابق گزشتہ سال کے مقابلے بیس کلو آٹے کا تھیلا ایک سو 62 روپے، ٹماٹر انہتر روپے، انڈے چھیالیس روپے، آلواٹھائیس روپے اور دال مونگ اکہتر روپے،ماش تریسٹھ روپے اور مسور پینتیس روپے مہنگی ہوگئی ۔
لہسن پچیس روپے ، پیاز ایک روپے اور ایل پی جی ایک سو ننانوے روپے سستی ہوگئی ۔
ستمبر میں مہنگائی کی شرح 9.04 فیصد تک جا پہنچی تھی اور مہنگائی میں1.54فیصداضافہ ریکارڈ کیا گیا، ادارہ شماریات کا کہنا تھا کہ گزشتہ ستمبر کے مقابلے میں مہنگائی کی شرح 9.04 فیصد رہی جبکہ جولائی تاستمبرگذشتہ سال کی پہلی سہ ماہی کی نسبت مہنگائی کی شرح 8.85 فیصد رہی۔

یہ بھی پڑھیں

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

اسلام آباد: جاوید اقبال نے سندھ کے چیف سکریٹری ممتاز علی شاہ کو 22 کروڑ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے