سابق انکم ٹیکس انسپکٹر خواجہ وسیم کو گرفتار کر لیا گیا ہے

سابق انکم ٹیکس انسپکٹر خواجہ وسیم کو گرفتار کر لیا گیا ہے

لاہور:ملزم خواجہ وسیم کے خلاف زائد اثاثہ جات کیس میں بڑی پیش رفت ہوئی ہے، ملزم کے گھر سے 33 کروڑ کی نقدی اور پرائز بانڈ برآمد ہوئے ہیں

نیب حکام کا کہنا ہے کہ ملزم خواجہ وسیم محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن لاہور میں گریڈ 16 کا ملازم تھا۔سابق انکم ٹیکس انسپکٹر خواجہ وسیم کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور ملزم کروڑوں روپے کے ذرائع تاحال ثابت نہیں کر سکا۔
نیب حکام کے مطابق ملزم کی اہلیہ کے نام پر بھی 19 کروڑ سے زائد نقدی و پرائز بانڈ ہونے کے شواہد ملے ہیں۔ملزم خواجہ وسیم نے 2018 میں ایمنسٹی اسکیم کا فائدہ اٹھاتے ہوئے کروڑوں روپے وائٹ کیے، ملزم اسکیم سے فائدہ حاصل کرنے کا اہل ہی نہ تھا۔
نیب لاہور کا کہنا ہے کہ ملزم کے بینک اکاؤنٹس میں 2013 سے 2017 تک 22 کروڑ سے زائد بیرون ملک سے منتقل ہوئے، ملزم بیرون ملک سے منتقل سرمائے کے ذرائع تاحال ثابت نہ کرسکا۔
نیب حکام کے مطابق ملزم خواجہ وسیم گرفتاری کے بعد احتساب عدالت کے روبرو پیش کر دیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

علی موسیٰ گیلانی کی ضمانت منظور کرلی گئی

علی موسیٰ گیلانی کی ضمانت منظور کرلی گئی

ملتان: ضمانت کے بعد گفتگو کرتے ہوئے علی موسیٰ گیلانی کا کہنا تھا ان کی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے