تمام تعلیمی اداروں کو مرحلہ وار کھولنے کے فیصلے کی مخالف

تمام تعلیمی اداروں کو مرحلہ وار کھولنے کے فیصلے کی مخالف

اسلام آباد: اے پی پی ایس ایف کے صدر کاشف مرزا نے کہا کہ حکومت تعلیمی سرگرمیاں دوبارہ شروع کرنے میں عدم سنجیدگی کا شکار ہے

انہوں نے سوال اٹھایا کہ ‘لاکھوں اساتذہ کے کورونا ٹیسٹ کروانے کے لیے ہمیں کون فنڈز دے گا’۔
کاشف مرزا نے کہا کہ حکومت کو اساتذہ کے لیے ایک ریلیف پیکیج کا اعلان کرنا چاہیے۔
انہوں نے کہا کہ حکومت نے ہفتے میں 3 دن کلاس رکھنے کی اجازت دی لیکن ڈبل شفٹ چلانے سے منع کردیا.
زیادہ تر اسکولوں میں تمام کلاسوں کے لیے کلاس روم نہیں ہیں اور صرف شام کی شفٹوں سے ہی اس مسئلے کو حل کیا جاسکتا ہے۔
پنجاب اساتذہ یونین کے جنرل سیکریٹری رانا لیاقت نے ڈان کو بتایا کہ حکومت کو چاہیے کہ پہلے سب سرکاری اسکولوں کے لیے ایک بجٹ جاری کرے جو ایس او پیز پر عمل درآمد کے لیے مختص ہو۔
صوبے میں کسی بھی سرکاری اسکول میں درجہ حرارت کی جانچ پڑتال کا آلہ نہیں ہے اور کون اساتذہ اور بچوں کو ماسک فراہم کرے گا۔
ویب سائٹ ٹوئٹر پر وزیر تعلیم پنجاب مراد راس نے اپنی ایک ٹوئٹ میں لکھا تھا کہ پنجاب کے تمام نجی اور سرکاری ادارے اس شیڈول کے مطابق کھلیں گے، جس کے تحت نویں سے 12 جماعت تک کے لیے 15 ستمبر سے اسکولز کھول دیے جائیں گے۔
چھٹی سے آٹھویں جماعت تک کے طلبہ کے لیے 22 ستمبر سے اسکولز کھلیں گے جبکہ نرسری سے پانچویں جماعت کے لیے 30 ستمبر سے کلاسز کا آغاز ہوگا۔
انہوں نے مزید بتایا تھا کہ کوئی ڈبل شفٹ نہیں ہوگی اور تمام نجی اور سرکاری اداروں کی جانب سے متبادل دن کے شیڈول پر عمل کیا جائے گا۔
ایک اور ٹوئٹ میں واضح کیا تھا کہ تمام نجی و سرکاری اسکولز کو ایک دن میں صرف 50 فیصد بچے بلانے کی اجازت ہوگی جبکہ متبادل دن میں دیگر 50 فیصد طلبہ بلائے جائیں گے، تاہم ایک دن میں ڈبل شفٹ کی اجازت نہیں ہوگی۔
ملک بھر میں تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق حتمی فیصلے کے لیے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی سربراہی میں بین الصوبائی وزرائے تعلیم کا ایک اجلاس ہوا۔
15 ستمبر سے تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق مختلف معاملات پر غور کیا گیا اور اس دوران مرحلہ وار تعلیمی ادارے کھولنے کی تجاویز دی گئیں۔
مزید یہ کہ اجلاس میں کورونا وائرس کی صورتحال اور وزارت صحت کی گائیڈلائنز کا بھی جائزہ لیا گیا جس کے تحت تعلیمی ادارے کھولیں جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

کورونا وائرس کے نئے کیسز سامنے آنے کی شرح میں بدستور اضافہ

کورونا وائرس کے نئے کیسز سامنے آنے کی شرح میں بدستور اضافہ

اسلام آباد: ڈی ایچ او آفس اسلام آباد کی رپورٹ کے گذشتہ روز اسلام آباد …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے