امریکی شہری کو فوری ملک بدر کرنے کے فیصلے پر عملدرآمد روک دیا

امریکی شہری کو فوری ملک بدر کرنے کے فیصلے پر عملدرآمد روک دیا

اسلام آباد: عدالت نے معاملے پر سیکریٹری وزارت داخلہ، وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) اور دیگر فریقین کو نوٹس جاری کیے ہیں اور اُنھیں جواب جمع کروانے کا حکم دیا ہے

وزارت داخلہ نے چند روز قبل سنتھیا کے ویزے کی مدت میں توسیع کی درخواست مسترد کرتے ہوئے انھیں 15 روز میں پاکستان چھوڑنے کا حکم دیا تھا۔
وزارت داخلہ کے اس فیصلے کے خلاف سنتھیا رچی نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی تھی۔
سنتھیا کی درخواست کی سماعت میں کیا ہوا؟
اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے پیر کو سنتھیا کی جانب سے دائر کردہ اس درخواست پر ابتدائی سماعت کی۔
عدالت نے اپنے فیصلے میں وزارت داخلہ کے اس فیصلے کے خلاف تمام الزامات کے حوالے سے تحریری طور پر آگاہ کرنے اور بیان حلفی بھی جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔
سنتھیا رچی نے اپنی درخواست میں کہا کہ وزارت داخلہ نے ہائی کورٹ میں تحریری جواب جمع کروایا ہوا ہے جس میں اس بات کا ذکر کیا گیا ہے کہ درخواست گزار ’ریاست مخالف یا غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث نہیں ہے۔
اس کے باوجود ویزے کی مدت میں توسیع کے لیے متعلقہ دستاویزات فراہم کرنے کے بعد بھی ان کے ویزے میں توسیع کی درخواست مسترد کر دی گئی۔
درخواست گزار کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ان کی موکلہ نے اسلام آباد کی مختلف عدالتوں میں درخواستیں دے رکھی ہیں۔ اس کے علاوہ ان کی موکلہ کے خلاف بھی مختلف عدالتوں میں مقدمات چل رہے ہیں۔
اُنھوں نے کہا کہ سنتھیا کے ویزے کی مدت میں توسیع نہ کرنے کے فیصلے سے عالمی سطح پر تاثر جائے گا کہ وزارت داخلہ ’جان بوجھ کر انھیں ان مقدمات کی پیروی سے روک رہی ہے۔
اس کے باوجود ویزے کی مدت میں توسیع کے لیے متعلقہ دستاویزات فراہم کرنے کے بعد بھی ان کے ویزے میں توسیع کی درخواست مسترد کر دی گئی۔
درخواست گزار کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ان کی موکلہ نے اسلام آباد کی مختلف عدالتوں میں درخواستیں دے رکھی ہیں۔ اس کے علاوہ ان کی موکلہ کے خلاف بھی مختلف عدالتوں میں مقدمات چل رہے ہیں۔
اُنھوں نے کہا کہ سنتھیا کے ویزے کی مدت میں توسیع نہ کرنے کے فیصلے سے عالمی سطح پر تاثر جائے گا کہ وزارت داخلہ ’جان بوجھ کر انھیں ان مقدمات کی پیروی سے روک رہی ہے۔
ہر روز پاکستانیوں کے ویزے مسترد ہوتے ہیں لیکن کوئی وجہ نہیں بتائی جاتی۔‘
درخواست گزار کے وکیل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اس درخواست میں ان کی گراؤنڈ یہ بنتی ہے کہ کیسز ماتحت عدالتوں میں زیر سماعت ہیں۔
عدالت نے سنتھیا رچی پر الزمات کے حوالے سے تحریری طور پر آگاہ کرنے اور بیان حلفی جمع کرانے کا حکم دیا اور کہا ہم یقینی بنائیں گے کہ درخواست گزار کو مکمل انصاف ملے۔
سنتھیا سے متعلق زیر التوا درخواستیں
امریکی شہری سنتھیا رچی کے خلاف اسلام آباد کی مختلف عدالتوں میں درخواستیں زیر التوا ہیں۔
ایک درخواست سابق حکمران جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کے ایک مقامی رہنما کی ہے جس میں اُنھیں ملک بدر کرنے کی استدعا کی گئی ہے، دوسرا معاملہ ایف آئی اے کے پاس ہے جس میں سنتھیا کی طرف سے سابق وزیر اعظم بینظیر بھٹو کی شخصیت کے بارے میں سوشل میڈیا پر مبینہ طور پر نازیبا الفاظ کہنے سے متعلق درخواست پر مقدمہ درج کرنے سے متعلق ہے۔
مذکورہ امریکی خاتون کی طرف سے سابق وزیر داخلہ رحمان ملک کے خلاف جنسی طور پر ہراسانی سے متعلق درخواست بھی اسلام آباد کی مقامی عدالت میں زیر سماعت ہے اور اسلام آباد ہائی کورٹ نے اس درخواست پر تین ہفتوں میں فیصلہ کرنے کا بھی حکم سنایا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

سال 2020 کی تیسری قومی انسداد پولیو مہم کا آغاز آج سے ہوگیا

سال 2020 کی تیسری قومی انسداد پولیو مہم کا آغاز آج سے ہوگیا

اسلام آباد: سربراہ نیشنل ایمرجنسی آپریشنل سینٹر فار پولیو (این ای او سی) ڈاکٹر صفدر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے