کوئٹہ سے ٹیکس وصولی کی منتقلی سے متعلق نوٹی فکیشن معطل

کوئٹہ سے ٹیکس وصولی کی منتقلی سے متعلق نوٹی فکیشن معطل

کوئٹہ: چیف جسٹس جمال خان مندوخیل اور جسٹس عبد الحمید بلوچ پر مشتمل بلوچستان ہائی کورٹ کے ڈویژن بینچ نے کوئٹہ کے چند صنعتکاروں کی جانب سے دائر درخواست پر ایف بی آر کے نوٹیفکیشن کو معطل کرنے کا حکم جاری

بینچ نے درخواست کی سماعت کے بعد اگلی سماعت تک نوٹیفکیشن کو معطل کیا۔
5 اگست کو ایک نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے ایف بی آر نے کوئٹہ سے کراچی میں 38 اہم صنعتکاروں اور کاروباری اداروں کی ٹیکس ادائیگیوں کو منتقل کیا تھا۔
اس سے قبل وہ کوئٹہ میں ایف بی آر کے دفتر میں اپنا ٹیکس جمع کروا رہے تھے۔
ہجویری اسٹیل انڈسٹریز نے اپنے وکیل محمد عامر رانا کے ذریعے ہائی کورٹ میں نوٹیفکیشن کو چیلنج کیا تھا۔
عامر رانا نے عدالت میں موقف اپنایا کہ بڑے ٹیکس دہندگان سے ٹیکس کی وصولی صوبائی حکومت کو اعتماد میں لیے بغیر کراچی منتقل کردی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ایسا کرنے سے عدالت کے دائرہ اختیار کی بھی خلاف ورزی ہوئی ہے اور وہ اب صرف سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کرسکیں گے۔
عدالت نے حکم دیا کہ اس ضمن میں بلوچستان کے لیے اٹارنی جنرل اور ایڈووکیٹ جنرل کو نوٹسز جاری کیے جائیں۔
بلوچستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (بی سی سی آئی) کے عہدیداروں نے کوئٹہ ریجن کے چیف کمشنر سے بھی مطالبہ کیا تھا کہ وہ چند روز قبل کیے گئے اس فیصلے پر نظرثانی کریں۔
ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان کی کاروباری برادری کے لیے کراچی میں اپنے ٹیکس جمع کروانا مشکل ہے۔
وکیل نے نشاندہی کی کہ کراچی اور ملک کے دیگر حصوں کے تاجروں نے اپنی صنعتیں بلوچستان کے صنعتی شہر حب میں قائم کی ہیں تاہم وہ کراچی میں ٹیکس جمع کراتے رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

متعلقہ دفاتر میں غیرحاضر رہنے والے افسران اور عملے کے خلاف انکوائری کا حکم

متعلقہ دفاتر میں غیرحاضر رہنے والے افسران اور عملے کے خلاف انکوائری کا حکم

کوئٹہ: وزیرتعلیم بلوچستان سردار یار محمد رند نے محکمہ تعلیم کے دفاتر کا اچانک دورہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے