تیل و گیس کی تلاش اور پیداوار (ای اینڈ پی) کی ریئل ٹائم میں نگرانی شروع کردی

تیل و گیس کی تلاش اور پیداوار (ای اینڈ پی) کی ریئل ٹائم میں نگرانی شروع کردی

اسلام آباد: وزارت توانائی کے پٹرولیم ڈویژن نے اتوار کے روز کہا کہ اس نے ایک پیٹرولیم ٹیکنالوجی کمپنی ایم ایل کے آر کے اشتراک سے ملکی تاریخ میں پہلی بار تلاش اور پیداوار کی معلومات کے موثر انتظام اور نگرانی کے لیے ‘ایک جدید ڈیش بورڈ ایپلی کیشن متعارف کروائی ہے

صوبوں کے مطالبے پر ابتدا میں خیبر پختونخوا اور اس کے بعد سندھ اور بلوچستان کے بعد مشترکہ مفادات کونسل (سی سی آئی) نے نومبر 2017 میں تیل، گیس اور بجلی کی پیداوار اور کھپت سے متعلق صوبوں کے ساتھ ریئل ٹائم کے اعداد و شمار شیئر کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔
صوبے تیل، گیس اور بجلی کی پیداوار اور کھپت کی بنیاد پر ٹیکسوں اور محصولات کے حساب کتاب میں شفافیت اور اس کی صوبوں میں منتقلی کے لیے اعداد و شمار کے تبادلے کا مطالبہ کررہے ہیں، سی سی آئی نے تیل اور گیس کی تیاری اور مختص رقم کی ریئل ٹائم نگرانی کرنے پر اتفاق کیا تھا۔
تیل اور گیس کی پیداوار اور کھپت سے متعلق مرکز سے صوبوں کو چار سلسلوں میں محصولات وصول ہوتے ہیں جن میں گیس ڈیولپمنٹ سرچارج، قدرتی گیس پر ایکسائز ڈیوٹی، خام، گیس اور ایل پی جی پر رائلٹی اور سیلز ٹیکس شامل ہیں۔
یہ منصوبہ اضافی بجٹ مختص کرنے، آئی ٹی آلات کی فراہمی یا کسی بیرونی و غیر ملکی امداد کے بغیر شروع کیا گیا ہے کیونکہ ایل ایم کے آر پہلے ہی ایک دہائی سے زیادہ عرصہ سے تلاش اور پیداوار کے اعداد و شمار کو برقرار رکھے ہوئے ہے۔
پیٹرولیم ڈویژن نے کہا کہ جدید ڈیٹا فلٹرنگ آلات کا استعمال کیا گیا ہے جو تاریخی اور موجودہ تلاش و پیداوار کی سرگرمیوں اور معلومات کو کو دیکھنے کے اختیارات فراہم کرے گا، کسی بھی معیاری یا تخصیص کردہ تلاش کے خلاف پی ڈی ایف، ایکسل شیٹ اور جی آئی ایس پرت کی شکل میں آؤٹ پٹ رپورٹس کو اس ایپلیکیشن سے نکالا جاسکتا ہے، یہ پروگرام منصوبہ بند اور اصل کنوؤں کے بارے میں معلومات فراہم کرے گا اور کمپنیوں کی کارکردگی کی نگرانی کے بارے میں بھی معلومات فراہم کرے گا۔
پروڈکشن ڈیش بورڈ کسی بھی کمپنی یا تمام کمپنیوں کے لیے کنوئیں اور کھیتوں کی روزانہ اور ہفتہ وار پیداوار کی نگرانی میں مدد کرے گا، اس ڈیش بورڈ کے استعمال سے ضروری اقدامات اور اصلاحی اقدامات کے ذریعہ تیل اور گیس کی پیداوار میں اضافہ کی توقع کی جاتی ہے جہاں کسی بھی وجہ سے پیداوار گرتی ہے یا رک جاتی ہے۔
ڈی جی پی سی بھی اس ڈیش بورڈ کا استعمال ای اینڈ پی کمپنیوں کی کلیدی کارکردگی کے اشارے اور پرفارمنس بینچ کا نشان لگانے اور متعلقہ معاہدوں کے تحت کیے گئے قواعد و ضوابط کی تعمیل کو یقینی بناتے ہوئے کمپنیوں کو کاروبار کرنے میں آسانی فراہم کرنے کے لیے استعمال کر سکے گا۔

یہ بھی پڑھیں

کورونا وائرس کے نئے کیسز سامنے آنے کی شرح میں بدستور اضافہ

کورونا وائرس کے نئے کیسز سامنے آنے کی شرح میں بدستور اضافہ

اسلام آباد: ڈی ایچ او آفس اسلام آباد کی رپورٹ کے گذشتہ روز اسلام آباد …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے