کڈنی ہل پارک کی زمین مکمل واگزار کرانے کا حکم دے دیا

کڈنی ہل پارک کی زمین مکمل واگزار کرانے کا حکم دے دیا

کراچی: عدالت نے زبانی حکم میں کڈنی ہل پارک کی زمین مکمل واگزار کرانے کا حکم دیتے ہوئے نجی اسکول کی عمارت بھی منہدم کرنے کی ہدایت کردی

ہل پارک اراضی قبضہ کیس کی سماعت کے دوران کمشنر کراچی نے کہا کہ مکینوں کو نوٹس جاری کردیے ہیں، جس پر کیس کے ایک فریق امبر علی بھائی نے کہا کہ ہل پارک کی مجموعی زمین 56 ایکڑ ہے، پی ای سی ایچ ایس نے 4 بنگلے الاٹ کردیئے ہیں، پہاڑی کاٹ کر بنگلے بنادیے گئے ہیں، تاہم کمشنر کراچی کا کہنا تھا کہ یہاں پر 13 گھر بنائے گئے ہیں۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا پی ای سی ایچ ایس نے تو نالوں پر ہی قبضہ کرادیا، سارا کیا دھرا پی ای سی ایچ ایس کا ہی ہے، سارے نالے ختم ہوگئے، شاہراہ قائدین کے ساتھ نالہ اب نظر ہی نہیں آتا۔
عدالت نے ہل پارک کی زمین پر قائم غیرقانونی تعمیرات و گھروں کو منہدم کرنے کا حکم دے دیا اور کمشنر کو ہدایت کی کہ قبضہ ختم کرا کر رپورٹ پیش کریں جبکہ ساتھ ہی کہا کہ الاٹیز رقم کی وصولی کے لیے متعلقہ اداروں سے رجوع کرسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں 100 ارب کی کرپشن بے نقاب ہوگئی

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں 100 ارب کی کرپشن بے نقاب ہوگئی

کراچی: سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں 100 ارب کی کرپشن بے نقاب ہوگئی، سندھ لوکل …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے