حشد الشعبی عراقی فوج کا حصہ ہے، اردوغان عراق کے داخلی معاملات میں مداخلت سے باز رہیں، عراقی حکومت

بغداد: عراقی حکومت نے ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان سے کہا ہے کہ وہ عراق کے داخلی معاملات میں مداخلت نہ کریں۔ عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کے دفتر نے ایک بیان جاری کرکے عراق کی عوامی رضاکار فورس کے خلاف ترک صدر کے بے بنیاد بیان کے ردعمل  میں کہا ہے کہ ترکی کے صدر عراق کے داخلی معاملات میں مداخلت کرنا بند کر دیں۔

عراقی وزیراعظم کے دفتر نے اپنے اس بیان میں کہا ہے کہ عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی نے دہشت گردوں کے قبضے سے عراقی سرزمین کو آزاد کرانے کے لئے عراقی افواج کے شانہ بشانہ جنگ کی اور اہم کامیابی حاصل کی ہے۔

عراقی وزیراعظم کے دفتر نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ عراق کا اپنا قومی اقتدار اعلٰی ہے اور ملک کے قانون کے مطابق عوامی رضاکار فورس عراقی افواج کا حصہ ہے، کہا کہ الحشد الشعبی عراق اور عراقی عوام کی وفادار فورس ہے اور وہ کسی دوسرے ملک کے تابع نہیں ہے۔

عراقی وزیراعظم کے دفتر نے دیگر ہمسایہ ملکوں سے بھی کہا ہے کہ وہ عراق کے داخلی معاملات میں مداخلت سے اجتناب کریں اور دہشت گردی کے خلاف جو علاقے اور دنیا کے لئے خطرہ بنی ہوئی ہے، جنگ میں عراق کی مدد کریں۔

واضح رہے کہ ترک صدر رجب طیب اردوغان نے دہشت گرد گروہوں کی حمایت میں بیان دیتے ہوئے کہا ہے  کہ عراق کی عوامی رضاکار فورس ایک دہشت گرد تنظیم ہے۔ عراق کی وزارت خارجہ نے اردوغان کے اس بیان کے بعد ترکی کے سفیر کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے شدید احتجاج کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

گرمی سے بچنے کے لیے خاتون اپنی نئی کرولا گاڑی گوبر میں چھپا دی

گرمی سے بچنے کے لیے خاتون اپنی نئی کرولا گاڑی گوبر میں چھپا دی

 احمد آباد میں ایک عورت نے اپنی نئی کرولا گاڑی کے اوپر گائے کا گوبر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے