افغان حکومت اور طالبان عیدالاضحیٰ کے دوران 3 دن کی جنگ بندی پر رضامند ہو گئے

افغان حکومت اور طالبان عیدالاضحیٰ کے دوران 3 دن کی جنگ بندی پر رضامند ہو گئے

کابل: افغان حکوت کے درمیان عید قرباں کے دوران تین دن کی جنگ بندی ہو گئی ہے، امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے فریقین کے درمیان سیز فائر کا خیر مقدم کیا

جنگ پر رضا مندی کے بعد افغان صدر اشرف غنی نے اپنے بیان میں کہا کہ امید ہے ایک ہفتے میں طالبان سے براہ راست بات چیت کا آغاز کریں گے، طالبان مذاکرات کی میز پر آئیں اور فوری مستقل اور مربوط جنگ بندی طے کریں۔
امریکی نمائندہ خصوصی نے طالبان اور افغان حکومت میں جنگ بندی کے اعلان کا خیر مقدم کیا ہے، زلمے خلیل زاد نے اپنے بیان میں کہا کہ امید ہے اس عید پر پائیدار امن کی جانب ایک قدم اور بڑھیں گے، اور عید تمام افغانوں کو ساتھ ملائے گی۔ ہم توقع کرتے ہیں کہ ایک دوسرے کے لیے عزت اور سمجھنے کی صلاحیت بڑھے گی، افغان عوام کو عید پر پُر امن تعطیلات کی مبارک باد دیتا ہوں، عید بھائی چارے اور صدقے کا نام ہے۔
امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے افغان عوام کو عید کی مبارک باد بھی دی۔

یہ بھی پڑھیں

اشرف غنی نے عید کے موقع پر500 طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کا اعلان کردیا

اشرف غنی نے عید کے موقع پر500 طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کا اعلان کردیا

کابل: افغان حکومت کی جانب سے مرحلہ وار طالبان قیدی رہا کیے جارہے تھے لیکن …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے