ایسا بلڈ ٹیسٹ ایجاد جس کے ذریعے علامات ظاہر ہونے سے بھی کئی برس پہلےکینسر کی تشخیص

ایسا بلڈ ٹیسٹ ایجاد جس کے ذریعے علامات ظاہر ہونے سے بھی کئی برس پہلےکینسر کی تشخیص

اس ٹیسٹ کو پانسیر کا نام دیا گیا ہے اور یہ مہدے، حلق، آنتوں ، جگر اور پھیپھڑوں کے کینسرکی علامات ظاہر ہونے سے بھی چار برس پہلے تشخیص کر سکتا ہے

نیچر کمیونیکیشن جرنل میں شائع نتائج میں سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ ٹیسٹ ایسے افراد کی نشاندہی کر سکتا ہے جنہیں کیسنر کا مرض لاحق ہونے کا خطرہ زیادہ ہے۔
یہ بات واضح رہے کہ اس ٹیسٹ کی درستی جاننے کے لیے ابھی ایک وسیع تحقیق درکار ہے۔
یونیورسٹی آف کیلیفورنیا کے پروفیسر کن زانگ اور تحقیق میں شامل ایک پروفیسر کا کہنا ہے کہ بنیادی مقصد یہ ہے کہ ر لوگوں کے سالانہ چیک اپ کے دوران اس طرح کے بلڈ ٹیسٹ کیے جائیں۔

یہ بھی پڑھیں

بیٹھنے کے بعد کھڑے ہونے پر چکر محسوس ہونے کو آرتھو اسٹیٹک ہائپو ٹینشن کہا جاتا ہے

بیٹھنے کے بعد کھڑے ہونے پر چکر محسوس ہونے کو آرتھو اسٹیٹک ہائپو ٹینشن کہا جاتا ہے

تحقیق کے سربراہ اور یونیورسٹی آف کیلی فورنیا کے پروفیسر لارا راؤچ کا کہنا ہے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے