سپریم کورٹ 4 اگست کو نئے بلدیاتی نظام کے متعلق پٹیشن سنے گی

سپریم کورٹ 4 اگست کو نئے بلدیاتی نظام کے متعلق پٹیشن سنے گی

راولپنڈی: بلدیاتی اداروں کی 5 سالہ مدت31 دسمبر 2021 کو ختم ہونا تھی تاہم پی ٹی آئی حکومت نے پہلے مرحلہ میں فنڈز روک کر ان کو غیر موثر کیا اور پھر 4 مئی 2019 کو نیا قانون لاگو کرکے بلدیاتی ادارے تحلیل کردیے گئے

ایک سال میں الیکشن کے فیصلے کے ساتھ انہیں ایڈمنسٹریٹر کے ماتحت کردیا گیا۔
کورونا کی صورتحال اور حکومتی کارکردگی کے تناظر میں نئے بلدیاتی الیکشن کے انعقاد کاکوئی امکان نہیں جبکہ اب تک حلقہ بندیاں بھی مکمل نہیں کی جا سکیں، سپریم کورٹ 4اگست کو بلدیاتی اداروں کی بحالی اور نئے بلدیاتی نظام کے حوالے سے پٹیشن کی سماعت کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں

نواز شریف کے اے پی سی سے خطاب کو روکنے لیے قانونی طریقہ کار پر غور

نواز شریف کے اے پی سی سے خطاب کو روکنے لیے قانونی طریقہ کار پر غور

اسلام آباد: اب اس معاملے پر وفاقی حکومت بھی میدان میں آ گئی ہے اور …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے