پٹرولیم مصنوعات کی قلت سے متعلق درخواستوں پر سماعت

پٹرولیم مصنوعات کی قلت سے متعلق درخواستوں پر سماعت

لاہور: درخواست گزار نے کہا کہ پٹرول فروخت کرنے والی کمپنیوں نے ناجائز منافع خوری کیلئے قیمتیں بڑھائیں، اوگرا سمیت دیگر حکومتی ادارے پٹرول کی قیمتوں اور قلت پر قابو پانے میں ناکام رہے

عدالت پٹرولیم مصنوعات کی قلت اور قیمتوں اضافے کے ذمہ داروں کیخلاف کاروائی کا حکم دے۔
عدالتی معاون نے بتایا کہ پٹرول کی درآمد اور ذخیرے کو ملک کی ضرورت کے مطابق ریگولیٹ کرنا اوگرا اور وزارت پٹرولیم کی ذمہ داری تھی، اوگرا، وزارت پٹرولیم ،آئل کمپنیز اور عوام اس کیس میں متعلقہ فریق ہیں۔
چیف جسٹس ہائی کورٹ نے ریمارکس دیے کہ وفاقی کابینہ اجلاس کے منٹس پڑھیں، منٹس بنانے والے نے وزیراعظم کو خوش کیا ہے، منٹس سے یہ کابینہ کا فیصلہ نہیں وزیراعظم کا لگتا ہے، شور مچا ہوا ہے کہ غیر منتخب افراد حکومت چلا رہے ہیں جو عوام کا نہیں سوچتے اور قیمت بڑھنے کا منافع لیتے تھے۔

یہ بھی پڑھیں

ہائی کورٹ نے ننکانہ کی سکھ لڑکی سے مسلمان لڑکے حسن کی شادی کو جائز قرار

ہائی کورٹ نے ننکانہ کی سکھ لڑکی سے مسلمان لڑکے حسن کی شادی کو جائز قرار

لاہور: ننکانہ میں سکھ لڑکی سے شادی کرنے والے لڑکے حسن کی جانب سے عدالت …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے