مردان، عبد الولی خان یونیورسٹی گارڈن کیمپس میں مبینہ توہین رسالت کے الزام میں طالب علم قتل

مردان: خیبر پختونخوا کے شہر مردان میں واقع عبدالولی خان یونیورسٹی گارڈن کیمپس میں طلباء کے تشدد سے ایک طالبعلم جاں بحق ہوگیا۔ ساتھی طلباء کے مطابق جاں بحق ہونے والے طالب علم پر الزام تھا کہ اس نے فیس بک پر ایک پیج بنا رکھا تھا، جہاں وہ توہین آمیز پوسٹس شیئر کیا کرتا تھا۔ ڈی آئی جی مردان عالم شنواری کے مطابق اسی الزام کے تحت مشتعل طلباء کے ایک گروپ نے مذکورہ طالب علم پر تشدد کیا، جس کے نتیجے میں طالب علم جاں بحق ہوگیا۔

طالب علم کی لاش کو پولیس نے تحویل میں لے کر پوسٹ مارٹم کیلئے ہسپتال منتقل کر دیا ہے۔ اس واقعہ میں ملوث طلباء کو گرفتار کر لیا گیا ہے، جبکہ مزید ملوث طلباء کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔ جاں بحق ہونے والا طالبعلم جرنلزم ڈپارٹمنٹ میں پڑھتا تھا۔ یونیورسٹی انتظامیہ کے مطابق واقعے کے بعد عبدالولی خان یونیورسٹی کو غیر معینہ مدت کیلئے بند کر دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

ایک مرتبہ پھر پشاور, کی مسجد قاسم خان کی غیر, سرکاری کمیٹی, کا دعویٰ

ایک مرتبہ پھر پشاور کی مسجد قاسم خان کی غیر سرکاری کمیٹی کا دعویٰ

خیبر پختونخوا:  مفتی منیب الرحمٰن نے کہا تھا کہ ’ کراچی اور زونل کمیٹیوں کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے