سندھ کا آئی جی ہوں کوئی کلرک نہیں جو اختیارات نہیں دیئے جا رہے، اے ڈی خواجہ

کراچی: آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا ہے کہ صوبے کا آئی جی ہوں، کلرک نہیں جو اختیارات نہیں دیئے جا رہے، جبکہ میری مرضی کے بغیر ڈی آئی جی ٹریفک لگا دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے فیروز آباد میں شہریوں کیلئے سہولت مرکز کے افتتاح کے موقع پر آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ سندھ کے ہر ضلع میں اس طرح کے سہولت مراکز قائم کئے جائیں گے، جبکہ انہوں نے شہریوں سے پولیس کے رپورٹنگ سینٹر میں رضاکارانہ طور پر کام کرنے کی درخواست بھی کی۔

آئی جی سندھ نے اس بات کا اعتراف کیا کہ تھانہ کلچر فوری تبدیل نہیں کیا جا سکتا، جبکہ انہوں نے اس بات کی تردید کی کہ انہیں ڈی جی ایف آئی اے لگایا جا رہا ہے۔ تقریب کے بعد میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں آئی جی سندھ کا کہنا تھا کہ پہلی مرتبہ میرٹ پر بھرتیاں کیں، جبکہ شہر میں ٹریفک کے بے پناہ مسائل ہیں، مگر ڈی آئی جی لگاتے وقت مجھ سے پوچھا تک نہیں گیا، لہٰذا اصل مسئلہ اختیارات کا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ صوبے کے آئی جی ہیں، کوئی کلرک نہیں، جو اختیارات نہیں دیئے جا رہے۔

یہ بھی پڑھیں

مختلف عناصر تینوں کو ناکام ثابت کرنے کیلیے نکاسی و فراہمی آب کا نظام خراب کرنے کو متحرک

مختلف عناصر تینوں کو ناکام ثابت کرنے کیلیے نکاسی و فراہمی آب کا نظام خراب کرنے کو متحرک

کراچی: صوبائی اور وفاقی حکومت کے درمیان سیاسی رسہ کشی بھی جاری ہے۔ ملکی معاشی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے