امریکی پروفیسر نے کرونا کے پھیلنے کی وجہ ایئر کنڈیشن کو قرار

امریکی پروفیسر نے کرونا کے پھیلنے کی وجہ ایئر کنڈیشن کو قرار

نیویارک: امریکی یونیورسٹی ہاوورڈ میڈیکل اسکول کے پروفیسر ایڈورڈ نارڈیل کا کہنا تھا کہ کرونا کے زیادہ کیسز اُن مقامات پر رپورٹ ہوئے جہاں ایئرکنڈیشن زیادہ استعمال کیا جاتا ہے

متاثرہ شخص کے چھینکنے اور کھانسنے کے بعد ہوا میں معلق ہونے والے زرات ہی دراصل کرونا کے پھیلنے کا سبب بنتے ہیں کیونکہ یہ ہوا کے ذریعے انسانی جسم میں باآسانی داخل ہوجاتے ہیں‘۔
پروفیسر ایڈورڈ نارڈیل کا کہنا تھا کہ ’عام طور پر جس جگہ (گھر، دفتر یا شاپنگ مال) میں اے سی لگا ہوتا ہے اُس جگہ کو ٹھنڈک برقرار رکھنے کے لیے بند رکھا جاتا ہے، ایسے مقامات پر جرثوموں کا ردعمل دیگر مقامات کے مقابلے میں زیادہ طاقتور ہوتا ہے اور یہی انفکیشن کے پھیلنے کا سبب بھی بنتا ہے‘۔
اُن کا کہنا تھا کہ ’گرمی سے گھر میں داخل ہونے والے لوگوں کے لیے اے سی کی ہوا خطرناک ثابت ہوسکتی ہے کیونکہ وہ اس سے خود اور دوسروں کو متاثر کرسکتے ہیں‘۔
پروفیسر ایڈورڈ نے شہریوں کو خبردار کیا کہ وہ ہر وقت ای سی استعمال نہ کریں اور جتنا ممکن ہو اس سے بچیں کیونکہ اس کے ذریعے بھی متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں

کورونا کے صحتیاب مریضوں سے پلازما لینے کا فیصلہ

کورونا کے صحتیاب مریضوں سے پلازما لینے کا فیصلہ

امریکا: امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے کورونا کی وبا کو اگست کے اختتام تک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے