ذہنی امراض اور اس کے بارے میں معاشرے کے رویے کو منفرد انداز سے اجاگر کیا ہے

ذہنی امراض اور اس کے بارے میں معاشرے کے رویے کو منفرد انداز سے اجاگر کیا ہے

صبا قمر نے حال ہی میں اپنا یوٹیوب چینل شروع کیا ہے جس میں انہوں نے چند ہی ویڈیوز پوسٹ کی ہیں تاہم ان ویڈیوز کے منفرد موضوعات کی وجہ سے انہیں بہت پسند کیا جارہا ہے

اب وہ اپنی نئی ویڈیو میں نہایت تخلیقی انداز میں ڈپریشن اور سماجی رویوں کو اجاگر کرتی نظر آئیں۔
اپنی ویڈیو میں صبا نے لوگوں کی شکل و صورت اور جسمانی ساخت کو موضوع گفتگو یا مذاق بنا لینے پر بات کی۔ انہوں نے ڈپریشن کے ہاتھوں زندگی ہار جانے والے افراد انعم تنولی، روشان فرخ اور بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت کا بھی ذکر کیا۔
انہوں نے بار بار سوال اٹھایا کہ ہم کب تک لوگوں کے ظاہر کو مذاق کا نشانہ بنا کر انہیں تکلیف میں مبتلا کرتے رہیں گے، یہ جانے بغیر کہ ہمارے لفظ اس شخص کو کتنی تکلیف میں مبتلا کردیتے ہیں۔
انہوں نے اس بات پر بھی تنقید کی کہ کیوں کسی کی زندگی میں دخل اندازی کی جاتی ہے اور لوگوں کو اپنی جاگیر سمجھا جاتا ہے، ہم لوگوں کو سائیکو، ملنگ، پاگل جیسے الفاظ سے پکارتے ہیں لیکن ان کی مدد نہیں کرتے۔
صبا نے کہا کہ ہم بچپن سے ہی پڑھتے آئے ہیں کہ کسی کو حقیر مت جانو، کسی کو نفرت سے نہ دیکھو لیکن ہم نے اس پر کبھی عمل نہیں کیا، کیونکہ یہ نفرت ہماری تربیت میں شامل ہے، ہمیں اپنے گھر سے ہی نفرت کرنے کی تربیت دی جاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پلاسٹک سرجن ڈاکٹرفہد مرزا نے حال ہی میں مجسمہ سازی میں مہارت دکھاتے ہوئے

پلاسٹک سرجن ڈاکٹرفہد مرزا نے حال ہی میں مجسمہ سازی میں مہارت دکھاتے ہوئے

فہد مرزا نے اس حوالے سے مزید وضاحت کرتے ہوئے لکھا، “سوال یہ تھا کہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے