اس 16سالہ لڑکی نے جسم کی ایسی چیز اتنی بڑی کرلی کہ اسکے پاس آنے سے پہلے سوچنا پڑتا ہے

فرینکفرٹ: لڑکیوں کو ناخن بڑھانے کابہت شوق ہوتا ہے لیکن اس لڑکی نے اپنے ناخن اتنے لمبے کرلئے ہیں کہ دیکھ کر لوگ چکرا جاتے ہیں۔ جرمنی کے شہر نرمبرگ کی رہائشی 16سالہ سیمونی ٹیلر کا کہنا ہے کہ وہ تین سال قبل سے اپنے ناخن نہیں کاٹ رہی اور اب ان کی لمبائی 6انچ تک ہوچکی ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ 2014ء میں اس نے ایک ویڈیو دیکھنے کے بعد انہیں لمبا کرنے کی ٹھانی اور آج وہ بہت خوش ہے،وہ اپنے ناخنوں کی اس قدر حفاظت کرتی ہے کہ صبح کے وقت اسے نہاتے اور پکڑے بدلتے گھنٹوں لگ جاتے ہیں۔

 

وہ کہتی ہے کہ دوستوں کو ٹیکسٹ کرنے کے لئے وہ اپنی انگلیوں کے پوروں کا استعمال کرتی ہے اور ناخن موبائل سے دور رکھتی ہے تاکہ وہ خراب نہ ہوں۔ سیمونی کہتی ہے کہ وہ پین بھی صحیح طرح نہیں پکڑ سکتی جس کی وجہ سے اسے امتحان میں بہت زیادہ مشکل ہوتی ہے۔’’پہلے سال میں یہی سوچتی تھی کہ انہیں کل کاٹ لوں گی لیکن پھر لوگوں کی طرف سے کی جانے والی تعریف کی وجہ سے میں ایسا نہیں کرتی تھی۔ مجھے قمیض کے بٹن بند کرتے ہوئے بہت زیادہ مشکل ہوتی ہے لیکن پھر بھی میں نے اپنے آپ سے عہد کیا ہوا ہے کہ میں انہیں کبھی نہیں کاٹوں گی۔‘‘سیمونی کا کہنا ہے کہ کبھی ایسا بھی ہوتا ہے کہ ناخن کپڑے میں الجھ جاتے ہیں جس کی وجہ سے اسے تکلیف ہوتی ہے لہذا وہ بہت زیادہ احتیاط کرتے ہوئے کپڑے پہنتی ہے ۔

سیمونی کے پاؤں کے ناخن بھی ایک انچ لمبے ہیں لیکن ہاتھوں کے مقابلے میں یہ چھوٹے نظر آتے ہیں۔’’اکثر لوگ مجھ سے پوچھتے ہیں کہ میں کس طرح غسل خانے جاتی ہوں تو میں مسکرا کر اس بات کو گول کرجاتی ہوں۔‘‘ سیمونی کہتی ہے کہ جولائی 2016ء میں اس کا ایک ناخن ٹوٹ گیا اور اسے شدید دکھ ہوالیکن اس کے بعد اس نے اپنے ناخنوں کی زیادہ حفاظت شروع کردی۔اس نے مئی 2015ء میں اپنا انسٹاگرام بھی بنایا اور اب اس کے فالوؤرز کی تعداد کثیر ہوچکی ہے اور وہ اس کے ناخنوں کی بہت تعریف کرتے ہیں۔ اس نے اپنے ناخنوں کی وجہ سے ایک بین الاقوامی ایوارڈ بھی اپنے نام کیا۔

یہ بھی پڑھیں

بھارت لائن آف کنٹرول پر اشتعال انگیزی کے ساتھ آبی جارحیت پر بھی اتر آیا ہے اور اس نے بڑے سیلابی ریلوں کا رخ پاکستان کی جانب موڑ دیا ہے جس کے باعث پاکستانی دریاؤں میں بڑے پیمانے پر سیلاب کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔ ترجمان این ڈی ایم اے کے مطابق بھارت نے لداخ ڈیم کے 3 اسپل ویز کھول دیئے ہیں جن کا پانی خرمنگ کے مقام پر دریائے سندھ میں شامل ہو گا۔ سیلاب کے خطرے کے پیش نظر گلگت بلتستان ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے الرٹ جاری کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ بھارت نے دریائے ستلج میں بھی بڑا سیلابی ریلا چھوڑ دیا ہے۔ ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی پنجاب کے حکام کا کہنا ہے کہ سیلابی ریلہ آج دن 11 بجے ہیڈگنڈا سنگھ والا کے مقام سے پاکستان میں داخل ہو گا اور پھر 30 گھنٹے بعد ہیڈ سلیمان کے راستے بہاول نگر میں داخل ہو گا۔ ترجمان این ڈی ایم اے بریگیڈئیر مختار احمد کے مطابق دریائے ستلج میں بھارتی پنجاب سے آنے والے پانی کے بڑے ریلے کی وجہ سے سیلاب کا خطرہ ہے۔ بریگیڈئیر مختار احمد کا کہنا ہے کہ محتاط اندازے کے مطابق ڈیڑھ سے 2 لاکھ کیوسک پانی پاکستانی حدود میں داخل ہو سکتا ہے۔ پی ڈی ایم اے پنجاب نے ضلع قصور اور اطراف کے اضلاع کی انتظامیہ کو کسی بھی ہنگامی صورتحال کے لیے تیار رہنے کی ہدایت کی ہے۔ بھارت نے سندھ طاس معاہدہ عملاً معطل کر دیا ہے: ڈپٹی کمشنر انڈس واٹر جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان کے ڈپٹی انڈس واٹر کمشنر شیراز میمن نے کہا ہے کہ بھارت کی جانب سے مسلسل آبی جارحیت جاری ہے، اس نے سندھ طاس معاہدے کو عملاً معطل کر دیا ہے۔ شیراز میمن نے کہا کہ بھارت نے ہر قسم کی واٹر ڈیٹا شیئرنگ بند کر دی ہے اور ڈیموں سے پانی کے اخراج پر پیشگی اطلاع نہیں دی، وہ مسلسل سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بھارت نے یکم جولائی سے ستمبر تک کا دریاوں کا ڈیٹا بھی نہیں بھیجا، کئی ماہ سے دونوں ملکوں کے شیڈول اجلاس بھی نہیں ہو رہے، بھارتی رویئے سے حکومت کو آگاہ کر دیا ہے۔ دریائے ستلج میں درمیانے اور اونچے درجے کے سیلاب کا خدشہ فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن نے نئی ایڈوائزری جاری کر دی ہے جس کے مطابق دریائے ستلج میں درمیانے اور اونچے درجے کے سیلاب کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔ فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن کے مطابق 20 اور 21 اگست سے گنڈا سنگھ والا پر بہاؤ 80 تا 90 ہزار کیوسک ہونےکا امکان ہے جو ڈیڑھ لاکھ کیوسک تک بھی جا سکتا ہے۔ فورکاسٹنگ ڈویژن کا کہنا ہے کہ 23 اگست سے ہیڈ سلیمانکی پر بھی بہاؤ بڑھنے کا امکان ہے۔ گزشتہ72گھنٹے میں راوی، بیاس اور ستلج کے بالائی علاقوں میں انتہائی شدید بارشیں ہوئیں جس کی وجہ سے بھاکرہ ڈیم اور زیر علاقوں سے آنے والا پانی سیلاب کا باعث بن رہا ہے۔ فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن نے متعلقہ اداروں کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔

بھارت کنٹرول لائن پر اشتعال انگیزی کے ساتھ آبی جارحیت پر بھی اتر آیا

بھارت لائن آف کنٹرول پر اشتعال انگیزی کے ساتھ آبی جارحیت پر بھی اتر آیا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے