کروناکےبڑھتے وار سے تشویشناک حالت کے مریضوں میں خطرناک حد تک اضافہ ہوگیا

کروناکےبڑھتے وار سے تشویشناک حالت مریضوں میں خطرناک حد تک اضافہ ہوگیا

لاہور: کروناکےبڑھتے وار سے تشویشناک حالت کے مریضوں میں خطرناک حد تک اضافہ ہوگیا، جس کے باعث شہرکے4بڑے ٹیچنگ اسپتالوں کے وینٹی لیٹرز100فیصد مکمل بھر گئے ہیں

جناح اسپتال،سروسزاسپتال،لاہورجنرل اسپتال میں 100فیصد وینٹی لیٹر زیر استعمال ہے اور کوٹ خواجہ سعید اسپتال میں100فیصد وینٹی لیٹرز بیڈز پر مریض زیر علاج ہیں جبکہ 6 بڑے اسپتالوں کے آئی سی یو اور ایچ ڈی یو بیڈز کورونا مریضوں کیلئے مختص نہیں کیے گئے۔
بیڈز مختص نہ ہونے والوں میں پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی،لیڈی ایچیسن،لیڈی ولنگٹن اسپتال، میاں منشی اسپتال، سید میٹھا اسپتال اور سوشل سیکیورٹی اسپتال شامل ہیں جبکہ ان اسپتالوں کے آئی سی یوز، ایچ ڈی یوز کے وینٹی لیٹر اور آکسیجن سلنڈر کو قابل استعمال نہیں بنایا گیا۔
میواسپتال کے 50آئی سی یوبیڈز میں سے44 پر مریض زیر علاج ہے، جس سے آکوپینسی ریٹ 88فیصدہوگیا، پی کے ایل آئی میں آکوپینسی ریٹ 75 فیصد تک جاپہنچا، جہاں 20بیڈزمیں سے15پرمریض زیرعلاج ہے۔
سرکاری اسپتالوں میں آئی سی یوز اور وایچ ڈی یوز میں جگہ نہ ملنے پر مریضوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔
گذشتہ چوبیس گھنٹے کے دوران چار ہزار نوسو چوالیس نئے کیسزرپورٹ ہوئے اور 136 مریض دم توڑگئے، جس کے بعد زیرعلاج مریضوں کی تعداد ایک لاکھ چارسو پچاس ہوگئی جبکہ اب تک اکسٹھ ہزارتین سوتیراسی افراد صحت یاب بھی ہوچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نیب احتساب کا نہیں،پولیٹیکل انجینئرنگ کا ادارہ ہے

نیب احتساب کا نہیں،پولیٹیکل انجینئرنگ کا ادارہ ہے

لاہور: رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ نیب احتساب کا نہیں،پولیٹیکل انجینئرنگ کا ادارہ ہے،چیئرمین …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے