قومی ادارہ برائے اطفال (این آئی سی ایچ) کے لیے فنڈز مختص کردیے

قومی ادارہ برائے اطفال (این آئی سی ایچ) کے لیے فنڈز مختص کردیے

اسلام آباد: وفاقی فنڈ کا سب سے بڑا حصہ این آئی سی وی ڈی کے لیے مختص کیا تھا جو 9 ارب 24 کروڑ روپے ہے جس کا مقصد نہ صرف کراچی میں موجود مرکزی ہسپتال کو چلانا ہے بلکہ سندھ کے دیگر علاقوں میں اس کی شاخوں اور سینے کی تکالیف کے یونٹس کو چلایا جائے گا

وفاقی بجٹ برائے سال 21-2020 کے بیان کے مطابق وفاقی حکومت نے ان ہسپتالوں کو چلانے کے لیے 14 ارب 18 کروڑ روپے مختص کیے جس میں سے 9 ارب 24 کروڑ 20 لاکھ روپے این آئی سی وی ڈی، 3 ارب 87 کروڑ 70 لاکھ روپے جے پی ایم ی اور ایک ارب 7 کروڑ روپے این آئی سی ایچ کے لیے مختص کیے گئے۔
وفاقی حکومت نے جناح ہسپتال کے لیے 3 ارب 87 کروڑ مختص کیے جس میں سے ایک ارب 54 کروڑ روپے اس کے آپریشنل اخراجات اور 15 کروڑ 86 لاکھ 60 ہزار مرمت اور دیکھ بھال پر خرچ کیے جائیں گے۔
مئی 2019 میں وفاقی وزارت صحت نے سپریم کورٹ کے جنوی 2019 میں دیے گئے حکم کے تحت کراچی کے تینوں بڑے ہسپتال واپس لینے کا فیصلہ کیا تھا۔
وفاقی حکومت ہسپتالوں کا انتظام سنبھالنے سے گریزاں ہے جو اب تک سندھ حکومت کے پاس ہے۔
سندھ حکومت نے کورونا سے متعلق 8 کھرب 75 ارب روپے کا پیکج فراہم کرنے کا دعوی کیا ہے جس کی وجہ سے مالی خسارہ مجموعی ملکی پیداوار (جی ڈی پی) کے 2 فیصد بڑھ کر 9.1 فیصد ہوگیا۔
12 کھرب کے ارب روپے کہ خصوصی محرک پیکج کہ جس میں ایک کھرب روپے کے ایمرجنسی فنڈ کا قیام بھی شامل تھا کی تفصیلات بتاتے ہوئے حماد اظہر نے بجٹ تقریر میں کہا کہ حکومت نے 8 کھرب 75 ارب روپے طبی آلات، ذاتی تحفظ کی اشیا اور ادویات کے لیے مختص کیے ہیں تا کہ کورونا وائرس سے لڑ کر اس کے معیشت اور عوام پر اثرات کو کم کیا جاسکے۔
زیادہ تر رقم نیشنل ڈزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو اور یوٹیلیٹی اسٹورز کے ذریعے استعمال کی جائے گی جبکہ ڈیڑھ کھرب روپے احساس پروگرام کے تحت ایک کروڑ 60 لاکھ خاندانوں اور شیلٹر ہومز کے لیے رکھے گئے۔

یہ بھی پڑھیں

کراچی میں کئی وفاقی رہائشی کالونیاں مسائل کا گڑھ بن گئی

کراچی میں کئی وفاقی رہائشی کالونیاں مسائل کا گڑھ بن گئی

کراچی: وفاقی وزارت ہاؤسنگ اینڈ ورکس کے زیرانتظام کراچی میں کئی وفاقی رہائشی کالونیاں ہیں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے