شکارپور کی سرکاری یونیورسٹی میں لڑکوں کی لڑکیوں سے گفتگو پر پابندی، نوٹی فیکیشن جاری

شکارپور:  اندرون سندھ کے ضلع شکارپور کی شاہ لطیف یونیورسٹی کیمپس میں لڑکوں کو لڑکیوں سے بات چیت کرنے سے منع کرنے کا انوکھا نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق خبردار کوئی لڑکا کسی لڑکی سے بات نہ کرے، شکارپور کی شاہ لطیف یونیورسٹی کیمپس میں انوکھا نوٹیفیکشن جاری کر دیا گیا ہے، نوٹیفکیشن کے مطابق کوئی لڑکا بغیر اجازت کسی لڑکی سے گفتگو کا مجاز نہیں، ایسا کرنے کی صورت میں اسٹوڈنٹ کے والدین کو بلایا جائے گا۔ نوٹی فکیشن کے مطابق پابندی کی خلاف ورزی کرنے والوں کے والدین کو تحریری شکایت بھی ارسال کی جائے گی، جبکہ اسٹوڈنٹس کو غیر ضروری طور پر دیر تک کیمپس میں رکنے کی بھی اجازت نہیں ہوگی۔ طلبہ اور طالبات بغیر کسی وجہ کے کوریڈور میں جانے سے گریز کریں،جبکہ لڑکوں کا لڑکیوں کے کامن روم کے پاس جانا بھی ممنوعہ قرار دیا گیا ہے۔ نوٹی فکیشن میڈیا پر آنے کے بعد یونیورسٹی رجسٹرار نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے نوٹیفکشن کی انکوائری کا حکم دے دیا۔ رجسٹرار کا کہنا ہے کہ ایسا کوئی بھی نوٹی فکیشن قبول نہ کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں

خورشید شاہ کو سخت سیکیورٹی میں سکھر کی احتساب عدالت میں پیش

خورشید شاہ کو سخت سیکیورٹی میں سکھر کی احتساب عدالت میں پیش

سکھر: سماعت شروع ہوئی نیب کی جانب سے خورشید شاہ کے15 روزہ جسمانی ریمانڈ کی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے