داعش نے 7 سالہ بچے کو خودکش بمبار بنادیا، معصوم بچے نے وہ کام کردیا کہ داعشی بھی حیران رہ گئے

بغداد: عراق میں فوجی اہلکاروں نے ایک 7سالہ بچے کو برطانوی فٹ بال کلب ’چیلسی‘ کی یونیفارم پہنے اپنی طرف آتے دیکھا۔ جب انہوں نے اس کی تلاشی لی تو یہ دیکھ کر ان کے اوسان خطا ہوگئے کہ اس معصوم بچے کے جسم پر خودکش جیکٹ موجود تھی۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ موصل میں پیش آیا۔ بچے کی شرٹ پر چیلسی کلب کے کھلاڑی ایڈن ہیزرڈ کا نام چھپا ہوا تھا۔ فوجیوں کے روکنے پر بچے نے انہیں بتایا کہ ”مجھے میرے انکل (داعش کے شدت پسند)نے بھیجا ہے۔ اس نے کہا تھا کہ جا کر فوجیوں کو اڑا دو۔“

 

منظرعام پر آنے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ فوجی بچے کی اس حیران کن اعترافی گفتگو کے بعد آہستہ سے اس کی شرٹ اتارتے ہیں اور اس کے سینے پر بندھے بم کے تار کاٹ کر اسے جسم سے الگ کرتے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق یہ ہولناک ویڈیو ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب عراقی افواج موصل کے شدت پسندوں کے زیرقبضہ علاقے سے شہریوں کو نکالنے کی جدوجہد کر رہی ہیں۔

 

یہ بھی پڑھیں

امریکی صدر نے سعودی عرب میں اضافی فوجی بھیجنے کی منظوری دے دی

امریکی صدر نے سعودی عرب میں اضافی فوجی بھیجنے کی منظوری دے دی

واشنگٹن: فوجی بھیجنے کا فیصلہ امریکی قومی سلامتی کے اعلیٰ سطح اجلاس میں کیا گیا، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے