پاکستان میں یہ شرمناک ترین کام زور پکڑگیا ہے، لڑکیوں کے بعد اب۔ایک ایسی رپورٹ منظر عام پر آگئی جسے پڑھ کر ہر پاکستانی کانپ اُٹھے

لاہور: پاکستان میں ایک ایسے شرمناک کام کی شرح میں ہوشربا اضافہ ہو گیا ہے کہ جان کر ہر پاکستان شرمسار ہو جائے گا۔ انگریزی اخبار ایکسپریس ٹربیون کی رپورٹ کے مطابق ملک میں لڑکوں اور لڑکیوں کے خلاف جنسی جرائم کی ایک رپورٹ منظرعام پر آئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ برس پاکستان میں لڑکوں کے ساتھ بدفعلی کیے جانے کے واقعات میں 10فیصد ہوا ہے۔ 2016ءمیں 2410لڑکیوں اور 1729لڑکوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ 2015ءکی نسبت لڑکوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے یہ واقعات 10فیصد زیادہ تھے۔

رپورٹ کے مطابق حیران کن طور پر گزشتہ سال جنسی زیادتی کا شکار ہونے والوں میں 41فیصد لڑکے تھے۔Cruel numbers 2016 نامی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ برس مجموعی طور پر 4139بچوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا جن میں سے 76فیصد واقعات دیہی علاقوں سے رپورٹ کیے گئے جبکہ 24فیصد شہری علاقوں سے سامنے آئے۔ پنجاب میں سب سے زیادہ 2676، سندھ میں 987، بلوچستان میں 166، اسلام آباد میں 156، خیبرپختونخوا میں 141، آزاد کشمیر میں 9اور گلگت بلتستان میں 4بچوں سے جنسی زیادتی کے واقعات رپورٹ ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں

قصور سے اغواء تین بچوں کی لاشیں مل گئیں

قصور سے اغواء تین بچوں کی لاشیں مل گئیں

قصور کے علاقے چونیاں میں ڈھائی ماہ کے دوران اغواء ہونے والے تین بچوں کی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے