مفتی کفایت اللہ کو ایک لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکوں کے عوض رہا کرنے کا حکم

مفتی کفایت اللہ کو ایک لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکوں کے عوض رہا کرنے کا حکم

ماسہرہ: مفتی کفایت اللہ کے خلاف کیس پر ان کے وکیل اور ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل کے دلائل کے اختتام کے بعد جسٹس شکیل احمد اور جسٹس احمد علی خان پر مشتمل دو رکنی بینچ نے فیصلہ سنایا

عدالت نے مفتی کفایت اللہ کو وہ مقامی مجسٹریٹ کے پاس کورونا وائرس وبائی امراض سے متعلق حکومتی رٹ کو چیلنج نہ کرنے کے لیے ایک لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کرانے کہ حکم دیا۔
ایڈوکیٹ بلال خان نے میڈیا نمائندوں کو بتایا کہ ان کے موکل مفتی کفایت اللہ نے کورونا وائرس میں مرنے والوں کی تعزیت کے لیے آواز اٹھائی ہے۔
انہوں نے کہا کہ عدالت نے ان کے موکل کو کورونا وائرس کے سلسلے میں وقتا فوقتا حکومت کے جاری کردہ احکامات کی پابندی کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔
پولیس نے جے یوآئی (ف) کے رہنما کو اس وقت گرفتار کیا جب وہ اپنی پارٹی کے نائب ضلعی سربراہ شاہ عبد العزیز کی آخری رسومات کے بعد مانسہرہ قصبے سے ترنگری گاؤں میں اپنے گھر واپس جارہے تھے جو 14 اپریل کو کوڈ – 19 میں انتقال کر گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

طور خم اور چمن بارڈر6 دن کیلیے مشروط کھولنے کا مطالبہ

طور خم اور چمن بارڈر6 دن کیلیے مشروط کھولنے کا مطالبہ

پشاور: پھل سبزیوں سمیت دیگر اشیائے خوردونوش کے لیے ہفتے کے 3 دن کے بجائے6دن …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے