سندھ، کے 3 ہسپتالوں کو کورونا مریضوں پر پلازما تھیراپی کے ٹرائل کی اجازت

سندھ، کے 3 ہسپتالوں کو کورونا مریضوں پر پلازما تھیراپی کے ٹرائل کی اجازت

کراچی: اس طریقے کا علاج دراصل این آئی بی ڈی کے ڈاکٹر طاہر شمسی نے پیش کیا تھا جنہوں نے کورونا وائرس کے مریضوں کی زندگیوں کو بچانے کے بیماری سے صحت یاب ہونے والے افراد کے خون میں موجود پلازما نکال کر بیماروں میں ڈالنے کا مطالبہ کیا تھا

سندھ کے محکمہ صحت کی جانب سے جاری ایک نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ کراچی کے 2 ہسپتالوں میں سے ایک سرکاری ڈاکٹر رتھ فاؤ سول ہستپال اور نجی شعبے کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف بلڈ ڈزیز(این آئی بی ڈی) کو اجازت دی گئی ہے
محکمہ صحت سندھ کے نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ تینوں نامزد کیے گئے ہسپتالوں میں ماہرین کی ایک ٹیم، جس میں ایک فزیشن، متعدی امراض کے ماہر، ایک انتہائی نگہداشت یونٹ کے ماہر، ایک کنسلٹنٹ ہیومیٹولوجسٹ، ٹرانسفیوژن ماہر اور سندھ بلڈ ٹرانسفیوژن اتھارٹی (ایس بی ٹی اے) کے نمائندے شامل ہوں گے۔
ڈاکٹر طاہر شمسی نے حکومت سندھ کے اس اقدام کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ طے شدہ پروٹوکول اور طریقہ کار کے تحت وہ اور ان کی ٹیم پیسو امیونائزیشن کے کلینیکل ٹرائلز کرے گی جس کی تکمیل میں دو ماہ تک کا وقت لگے گا۔
ہم آزمائشی عمل کے تحت کل 350 مریضوں کا علاج کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں، طے شدہ اصولوں اور پروٹوکول کے تحت ، ہم سامنے آنے والے نتائج کے بارے میں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی پاکستان (ڈریپ) کو اپ ڈیٹ کرتے رہیں گے‘۔
’ہر 10 مریضوں کے بعد حکام کو تازہ نتائج کے بارے میں بتایا جائے گا۔ سندھ میں ان تین مراکز کے ساتھ ساتھ ہمارے پاس ملک کے دیگر شہروں میں بھی مراکز موجود ہیں جہاں ہم ڈریپ سے منظوری کے بعد ٹرائلز کریں گے‘۔
انہوں نے کہا کہ ’ہم امید کرتے ہیں کہ یہ کام دو ماہ میں مکمل ہوجائے گا‘۔
کورونا وائرس سے صحت یاب مریضوں سے پلازما جمع کرنے کے طریقہ کار کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کوئی بھی کسی کو مجبور نہیں کرسکتا ہے اور اس کام کے لیے صرف ان لوگوں کے سے امید ہے جو قومی مفاد کے لیے خود رضاکارانہ طور پر اپنی خدمت پیش کرنا چاہتے ہیں‘۔

یہ بھی پڑھیں

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں 100 ارب کی کرپشن بے نقاب ہوگئی

سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں 100 ارب کی کرپشن بے نقاب ہوگئی

کراچی: سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں 100 ارب کی کرپشن بے نقاب ہوگئی، سندھ لوکل …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے