ناسا کے انجینئرز نے بھی کرونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لیے اپنا کردار ادا کر دیا

ناسا کے انجینئرز نے بھی کرونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لیے اپنا کردار ادا کر دیا

واشنگٹن: ناسا نے کرونا کے مریضوں کے لیے خاص طور پر جدید ٹیکنالوجی سے لیس وینٹی لیٹر تیار کر لیا ہے جس سے کرونا کے تشویش ناک مریض کی جان بچانے میں زیادہ آسانی ہوگی

یہ جدید ترین وینٹی لیٹر عام وینٹی لیٹر سے جسامت میں مختصر ہے لیکن کرونا مریضوں کے لیے بہت کار آمد ہے، ناسا کے ترجمان کا کہنا تھا کہ یہ وینٹی لیٹر وائٹ ہائوس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سامنے معائنے کے لیے پیش کر دیا گیا ہے۔
یہ ہائی پریشر وینٹی لیٹر محض 37 دنوں میں تیار کیا گیا ہے، اسے وائٹل (VITAL) کا نام دیا گیا ہے، رواں ہفتے اس کا نیویارک کے ایک اسکول آف میڈیسن میں اہم ٹیسٹ بھی کیا گیا جو پاس ہوا۔
ناسا کے چیف ہیلتھ اینڈ میڈیکل آفیسر ڈاکٹر جے ڈی پولک نے بتایا کہ یہ وینٹی لیٹر اس ارادے کے ساتھ تیار کیا گیا ہے کہ کو وِڈ نائنٹین کے مریضوں کو اس مرض کے شدید درجے پر پہنچنے کے امکانات کو کم کیا جائے۔ انجینئرز کا کہنا ہے کہ وائٹل کو بہت تیزی سے کے ساتھ بنایا جا سکتا ہے، کیوں کہ اس میں بہت کم پارٹس کا استعمال کیا گیا ہے جو موجودہ سپلائی چینز میں بھی دستیاب ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

طلوع آفتاب سے قبل تین منزلہ رہائشی عمارت گرنے سے کم از کم 10 افراد ہلاک

طلوع آفتاب سے قبل تین منزلہ رہائشی عمارت گرنے سے کم از کم 10 افراد ہلاک

بھارت: بھونڈی کی نگرانی کرنے والے تھانہ سٹی اتھارٹی کے ایک عہدیدار نے اے ایف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے