بے معنی ملاقات میں تکنیکی ٹیم شرکت نہیں کرے گی

بے معنی ملاقات میں تکنیکی ٹیم شرکت نہیں کرے گی

قطر: طالبان کے دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ ’بے معنی ملاقات میں تکنیکی ٹیم شرکت نہیں کرے گی اور قیدیوں کی رہائی کبھی کسی وجہ سے روکی جاتی ہے کبھی کسی وجہ سے

طالبان اور امریکا کے درمیان ہونے والے معاہدے میں طے پایا تھا کہ امریکا کی قیادت میں بین الاقوامی فورسز طالبان کی جانب سے سیکیورٹی ضمانتوں کے بعد افغانستان سے چلی جائییں گی۔
یہ معاہدہ 19 سال سے جاری جنگ کے خاتمے کا حصہ تھا۔
امریکا کی حمایت یافتہ افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات امن میں رکاوٹ بن گئے ہیں۔
قیدیوں کا تبادلہ دونوں جانب سے مذاکرات کے لیے اعتماد پیدا کرنے کے لیے تھا۔
حکومت کے ترجمان کا کہنا تھا کہ وہ قیدیوں کی رہائی کے مںصوبے پر اپنا کام جاری رکھیں گے۔
کابل میں نیشنل سیکیورٹی کونسل کے ترجمان جاوید فیصل کا کہنا تھا کہ ’ہم طالبان سے درخواست کرتے ہیں کہ بہانے بنا کر اس عمل کو سبوتاج نہ کریں‘۔
طالبان کی جانب سے مذاکرات معطل کرنے سے تشدد میں اضافہ ہوسکتا ہے جو بدلے میں امریکا کے فوجی انخلا کے مںصوبے پر اثرات ڈال سکتا ہے جو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا اہم ہدف ہے۔
گزشتہ ماہ طالبان کی 3 رکنی ٹیم قطر سے کابل پہنچی تھی تاکہ قیدیوں کے تبادلے پر مذاکرات کرسکیں۔
گزشتہ ہفتے افغان حکام کا کہنا تھا کہ وہ بیمار اور 50 سال سے زائد عمر کے100 قیدیوں کو رہا کرے گی۔
بدلے میں انہیں امید تھی کہ طالبان افغان سیکیورٹی فورسز کے 20 اہلکاروں کو رہا کرے گی۔
امریکا کے ساتھ ہونے والے طالبان کے معاہدے میں طے کیا گیا تھا کہ افغان حکومت سے طالبان کے مذاکرات سے قبل افغان حکومت طالبان کے 5 ہزار قیدیوں اور طالبان افغان حکومت کے ایک ہزار قیدیوں کو رہا کرے گے۔

یہ بھی پڑھیں

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

ریاض: سعودی محکمہ موسمیات نے امکان ظاہر کیا ہے کہ ریاض، مدینہ منورہ، بریدہ، نجران، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے