کالعدم لشکر جھنگوری کے ہلاک دہشت گرد دلدار عرف چاچا سے متعلق اہم انکشافات

کراچی: سی ٹی ڈی کے ہاتھوں کراچی کے علاقے کورنگی میں ہلاک کالعدم لشکر جھنگوی کے دہشت گرد کے حوالے سے مزید انکشافات سامنے آئے ہیں۔ ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی ثناء اللہ عباسی کے مطابق لشکر جھنگوی کے سلیپر سیل کا امیر دلدار عرف چاچا مانسہرہ کا رہائشی تھا، اس نے 2001ء میں کالعدم مذہبی جماعت میں شمولیت اختیار کی۔ بعد ازاں دلدار نے لشکر جھنگوی میں 2010ء میں شمولیت اختیار کی تھی۔ ثناء اللہ عباسی نے بتایا کہ دلدار عرف چاچا نے عمران بھٹی عرف موٹا سے بم بنانا سیکھا، عمران بھٹی عرف موٹا 2010ء میں مارا گیا تھا۔ دلدار کے مارے جانے سے لشکر جھنگوی کا پرانا گروہ ختم ہوگیا۔ دلدار عرف چاچا گرفتار دہشت گرد اسحاق بوبی کا سسر تھا، اسحاق بوبی امجد صابری کے قتل اور سیکیورٹی اداروں پر حملوں میں ملوث ہے۔

 ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی نے کہا کہ کارروائیوں کو شفاف بنانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، دہشت گردوں سے ملنے والے دھماکا خیزمواد کو پہلی بار فارنزک ٹیسٹ کیلئے بھجوایا جارہا ہے، مواد کا دہشت گردی میں استعمال مواد سے موازنہ کرایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ گرفتار ملزمان سے تفتیش کیلئے جے آئی ٹی کی درخواست کر رہے ہیں، محکمہ داخلہ سے جے آئی ٹی کی درخواست میں پاک بحریہ کی شمولیت کی درخواست کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں

ساحلی علاقے صوبائی حکومت کے زیر انتظام لانے کا فیصلہ

ساحلی علاقے صوبائی حکومت کے زیر انتظام لانے کا فیصلہ

کراچی: قانونی مسودے کی سندھ اسمبلی سے منظوری کے بعد کراچی کے تمام ساحل سندھ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے