برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کو بدستور کورونا وائرس کی علامتوں کا سامنا

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کو بدستور کورونا وائرس کی علامتوں کا سامنا

برطانیہ: بورس جانسن میں گزشتہ ماہ کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت پایا گیا تھا جس کے بعد انہیں ڈاؤننگ اسٹریٹ میں آیئسولیٹ کردیا گیا تھا تاہم بخار بدستور تیز رہنے پر ڈاکٹروں نے ان کے کچھ اور ٹیسٹس کرنے کا فیصلہ کیا تھا جس پر انہیں اتوار کی رات ہسپتال لے جایا گیا تھا

ڈاؤننگ اسٹریٹ کے دفتر سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ’اپنے معالج کی ہدایت پر وزیراعظم آج رات مزید ٹیسٹ کروانے کے لیے ہسپتال میں داخل ہوگئے‘۔
’یہ ایک احتیاطی اقدام ہے کیوں کہ وزیراعظم کو کورونا وائرس کی تشخیص کے 10 روز گزرنے کے باوجود کورونا وائرس کی علامتوں کا سامنا ہے‘۔
55 سالہ بورس جانسن کو 27 مارچ کو کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی تھی اور یوں وہ اس وبا سے متاثر ہونے والے دنیا کے پہلے برسر اقتدار رہنما بن گئے تھے۔
وائرس کی تشخیص کے بعد وہ ڈاؤننگ اسٹریٹ میں ایک اپارٹمنٹ میں آئیسولیٹ ہوگئے تھے اور جمعے کے روز انہوں نے بتایا تھا کہ ان کا بخار اب بھی تیز ہے اس لیے وہ وہیں مقیم ہیں۔
ڈاؤننگ اسٹریٹ کی جانب سے بیان میں کہا گیا کہ یہ ہنگامی صورتحال میں ہسپتال میں داخل ہونے کا معاملہ نہیں تھا اور بورس جانسن اب بھی حکومت کی باگ دوڑ سنبھالے ہوئے ہیں۔
اس حوالے سے ذرائع کا کہنا تھا کہ سیکریٹری خارجہ ڈومینک راب کووِڈ 19 پر حکومت کے ہنگامی اجلاس کی سربراہی کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں

یوڈسن نے اعلان کیا ہےموٹر سائیکل مارکیٹ انڈیا سے اپنا کاروبار سمیٹ رہی ہے

یوڈسن نے اعلان کیا ہےموٹر سائیکل مارکیٹ انڈیا سے اپنا کاروبار سمیٹ رہی ہے

انڈیا: امریکہ کی مقبول موٹر سائیکل بنانے والی کمپنی ہارلے ڈیوڈسن نے اعلان کیا ہے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے