حج کے لیے تیاریوں کو عارضی طور پر مؤخر کردیں

حج کے لیے تیاریوں کو عارضی طور پر مؤخر کردیں

ریاض: موجودہ صورتحال میں چونکہ ہم عالمی وبا کی بات کر رہے ہیں تو ریاست مسلمانوں اور شہریوں کی صحت کے تحفظ کی خواہاں ہے، لہٰذا ہم نے تمام ممالک میں اپنے مسلمان بھائیوں کو کہا ہے کہ جب تک صورتحال واضح نہیں ہوتی حج معاہدوں کے لیے انتظار کریں

سعودی حکومت کی جانب سے ابھی یہ اعلان نہیں کیا گیا کہ آیا وہ رواں سال حج کی اجازت دے گا۔
اسلام کا 5واں رکن حج سعودی عرب کے لیے ایک بڑی آمدنی کا ذریعہ ہے اور گزشتہ برس 25 لاکھ لوگوں نے فریضہ حج ادا کیا تھا۔
سعودی عرب کی جانب سے اپنے ملک میں اس وائرس کو روکنے کے لیے مخلتف اقدامات کیے جارہے ہیں تاہم اس کے باوجود وہاں کی وزارت صحت نے اب تک ایک ہزار 563 افراد کے اس سے متاثر ہونے اور 10 اموات کی تصدیق کی ہے۔
گزشتہ ماہ کے اوائل میں سعودی عرب نے نئے کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر عمرے کو معطل کردیا تھا۔
4 مارچ کو عمرے کی ادائیگی عارضی طور پر معطل کرنے کے بعد سعودی انتظامیہ نے خانہ کعبہ کے صحن (مطاف) کو خالی کروادیا گیا تھا۔
عمرے کی عارضی معطلی کے حوالے سے سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ فیصلے کا باقاعدگی سے جائزہ لیا جائے گا اور حالات تبدیل ہوتے ہی فیصلے کو واپس لے لیا جائے گا۔
تاہم گزشتہ روزسعودی حکومت نے محدود تعداد میں مطاف میں طواف کرنے کی اجازت دے دی تھی۔

یہ بھی پڑھیں

ریاست جارجیا کے حراستی مراکز میں قید خواتین کے ’رحم مادر‘ نکالے جانے کا اسکینڈل

ریاست جارجیا کے حراستی مراکز میں قید خواتین کے ’رحم مادر‘ نکالے جانے کا اسکینڈل

امریکا: اسکینڈل اس وقت سامنے آیا جب ریاست جارجیا کی ارون کاؤنٹی کے ایک حراستی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے