بجلی بلز میں رعایت ختم کرنے کے معاملے پر ٹیکسٹائل ملز مالکان اور حکومت کے درمیان تنازع

بجلی بلز میں رعایت ختم کرنے کے معاملے پر ٹیکسٹائل ملز مالکان اور حکومت کے درمیان تنازع

لاہور: آل پاکستان ٹیکسٹائلز ملز ایسوسی ایشن (اپٹما) نے وزیر اعظم عمران خان کو خط لکھ کر کہا ہے کہ پاور ڈسٹری بیوشن کمپنیز نے ملز مالکان کو 12 ماہ کے بلز بقایا جات بھجوا دیے، جسے ادا کرنے سے قاصر ہیں

اپٹما کا کہنا تھا کہ تمام ملز مالکان نے اضافی بل دینے سے انکار کر دیا ہے، بارہ ماہ کے بقایا جات وزارت توانائی و پٹرولیم کا ظلم ہے، ہم کروڑوں روپے اضافی بل ادا نہیں کر سکتے۔
اپٹما نے خط میں کہا کہ ان حالات میں ٹیکسٹائل ملز نہیں چل سکتیں، اس فیصلے سے 10 لاکھ مزدور پنجاب میں بے روز گار ہو سکتے ہیں، حکومت کو اس سلسلے میں کچھ لوگ غلط مشورے دے رہے ہیں۔
رواں ماہ 7 فروری کو اپٹما اور ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل ایسوسی ایشن کے نمایندوں نے ریفنڈ کی فوری ادائیگی اور گیس ٹیرف میں کمی نہ کرنے کی صورت میں ہفتہ وار بنیادوں پر ایک دن برآمدی سرگرمیاں بند کرنے کا اعلان کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

لاہور سمیت پنجاب بھر میں لاک ڈاؤن میں 14 اپریل تک توسیع کر دی گئی

لاہور سمیت پنجاب بھر میں لاک ڈاؤن میں 14 اپریل تک توسیع کر دی گئی

لاہور:محکمہ داخلہ پنجاب نے لاک ڈاؤن میں توسیع کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔ اس سے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے