ڈیرہ غازی خان میں لڑکی کو پولیس اہلکارسمیت 6 افراد نے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

ڈی جی خان: پولیس نے عدالتی حکم پر پولیس اہلکار سمیت 6 افراد کی لڑکی سے زیادتی کی تحقیقات شروع کردی ہیں۔

 ڈیرہ غازی خان میں فیصل آباد کی رہائشی لڑکی سے پولیس اہلکارسمیت 6 افراد کی مبینہ اجتماعی زیادتی پرتھانہ سول لائن پولیس نے عدالتی حکم کے تحت کارروائی شروع کردی ہے۔

متاثرہ لڑکی کا کہنا ہے وہ کچھ روز قیام کے لیے فرید آباد میں اپنی خالاہ کے گھر آئی تھی، خالہ کے پڑوس میں رہائش پزیر پولیس اہلکار سجاد نے اپنے 5 دیگر ساتھیوں کے ساتھ مل کر اسے اغوا کیا اور ثوٹی زیریں لے گیا۔ جہاں ان لوگون نے اسے زیادتی کا نشانہ بنایا، کئی روز بعد جب وہ دندروں کے چنگل سے بھاگ کر واپس ڈیرہ گازی خان پہنچی تو پولیس اہلکاروں نے اپنے پیٹی بھائی اور دیگر مزلمان کو بچانے کے کارروائی سے ہی انکار کردیا۔

اہل خانہ کی جانب سےعدالت سے رجوع کرنے پر مجسٹریٹ نے لڑکی کا طبی معائنہ کرانے کا حکم دے دیا، عدالت نے متعلقہ پولیس حکام کو حکم دیا کہ وہ معاملے کی تفتیش کرین اور جلد از جلد ملزمان کو قانون کے کٹھہرے میں لائیں۔ عدالتی احکامات پر پولیس نے کارروائی شروع کردی ہے تاہم اب تک کسی ملزم کو حراست میں نہیں لیا گیا۔ متاثرہ لڑکی اوراہلخانہ نے وزیراعلیٰ پنجاب سے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے انصاف کی اپیل کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

منشیات فروشی میں ملوث عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی جائے، سردار عثمان بزدار

منشیات فروشی میں ملوث عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی جائے، سردار عثمان بزدار

لاہور : وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے منشیات فروشی میں ملوث عناصر کے خلاف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے