2019 پاکستان میں محفوظ ترین سال رہا، افغان امن عمل کے لیے پہلی مرتبہ درست راستے کا انتخاب کیا

2019 پاکستان میں محفوظ ترین سال رہا، افغان امن عمل کے لیے پہلی مرتبہ درست راستے کا انتخاب کیا

اسلام آباد: وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ افغان امن عمل کے لیے پہلی مرتبہ درست راستے کا انتخاب کیا گیا، امریکا نے طالبان کے ساتھ امن معاہدے کے لیے مذاکرات شروع کیے، مذاکرات کی کامیابی سے ہی امن کا قیام ممکن ہوگا

وزیر اعظم نے پڑوسی ملک بھارت کی موجودہ قیادت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی قیادت آرایس ایس کے نازی نظریے پر عمل پیرا ہے، اقلیتوں پر مظالم کے ساتھ مقبوضہ کشمیر میں بھی انسانی حقوق کی مسلسل پامالی کی جا رہی ہے۔
گزشتہ روز وزیر خارجہ شاہ محمود نے دفتر خارجہ میں بین الاقوامی سیکورٹی ورکشاپ کے شرکا کو بریفنگ میں کہا تھا کہ پاکستان کو افغان امن کے لیے اہم جزو سمجھا جا رہا ہے جو سفارتی کامیابی ہے، پاکستان کی ٹیرر فنانسنگ کے خلاف کوششوں کو عالمی سطح پر سراہا گیا۔ انھوں نے کہا کہ لاکھوں کشمیریوں کو بنیادی انسانی حقوق سے محروم رکھا جا رہا ہے، کشمیری عوام کا رابطہ بیرونی دنیا سے منقطع ہے، مسئلہ کشمیر پاکستان کی خارجہ پالیسی کا بنیادی جزو ہے۔

یہ بھی پڑھیں

تعلیمی رکاوٹ کم سے کم کرنے کے لیے تعاون کی ضرورت

تعلیمی رکاوٹ کم سے کم کرنے کے لیے تعاون کی ضرورت

اسلام آباد: کچھ جامعات میں آن لائن کلاسز کی شکایات پر مواد کا معیار، ادائیگی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے