خود بخود آ کر لگنے والے گھوسٹ شپ کا مبینہ مالک سامنے آ گیا

خود بخود آ کر لگنے والے گھوسٹ شپ کا مبینہ مالک سامنے آ گیا

ڈبلن: آئرلینڈ کے قانون کے مطابق بحری جہازوں کا ڈھانچا ریونیو کا محکمہ وصول کرتا ہے، ناکارہ بحری جہازوں کے معاملے کی انتظامی ذمہ داری ریونیو سروس کو حاصل ہے

ابتدائی طور پر پُراسرار سمجھا جانے والا بحری جہاز جب آئرلینڈ کے جنوبی ساحل سے آ لگا تھا تو اس وقت وہ بالکل خالی تھا، اس پر کوئی بھی انسان موجود نہیں تھا، معلوم ہوا کہ 77 میٹر (250 فٹ) طویل یہ کارگو جہاز ایم وی آلٹا ایک سال سے زائد سمندر میں لہروں پر ڈولتا رہا اور پھر برطانیہ میں آنے والے طوفان ڈینس کی تیز ہواؤں کے باعث جنوبی شہر کارک کے قریب گاؤں کے باہر پتھروں میں ٹھہر گیا تھا۔
قانون کے مطابق ملکیت کے دعوے دار کے پاس ایک سال ہوتا ہے جس میں وہ محکمے میں اپنا کیس رجسٹر کرتا ہے، اور اسے اپنا جہاز بچانے کا موقع فراہم کیا جاتا ہے.
کارک کاؤنٹی کونسل نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایم وی آلٹا جہاز سے آس پاس کے پانیوں میں آلودگی نہیں پھیلی، جو قابل اطمینان امر ہے کیوں کہ معلوم ہوا ہے کہ جہاز پر ایندھن بھی موجود ہے، جہاز پر کسی قسم کا کارگو تو نہیں پایا گیا تاہم تیل اور دیگر مٹیریلز کے کئی سربمہر کنٹینرز موجود تھے، جس سے آلودگی پھیلنے کا خدشہ رہتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

عالم دین چرچ میں فرائض انجام دیتے ہوئے

عالم دین چرچ میں فرائض انجام دیتے ہوئے

لبنان: ایک عالم دین کورونا کی روک تھام کے لئے جاری مہم کے تحت ملک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے