وزیراعظم کے دائیں بائیں بیٹھے لوگوں نے چینی، آٹے کی بلیک مارکیٹنگ سے اربوں کمائے

وزیراعظم کے دائیں بائیں بیٹھے لوگوں نے چینی، آٹے کی بلیک مارکیٹنگ سے اربوں کمائے

اسلام آباد: حکومت عوام کو سبسڈی نہیں، دھوکہ دے رہی ہے ڈاکٹر، مریض، کسان، مزدور اساتذہ، طلبا، ملازمین سب پریشان ہیں موجودہ حکومت کے آنے کے بعد سانس لینا مشکل ہو گیا ہے

پاکستان کے 22 کروڑ عوام شدید معاشی بحران کا شکار ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پاکستانیوں کیلیے اب پانی پینا بھی مشکل ہو گیا ہے۔ حکومت نعروں اور اعلانات تک محدود ہے۔ حکومت آئی ایم ایف سے کیے گئے تمام معاہدے فوری منسوخ کرے۔ حکومت ملک کی جمع پونجی آئی ایم ایف کے حوالے کر رہی ہے۔ لوگ مہنگائی اور بیروزگاری کے ہاتھوں تنگ آ کر خود کشیاں کر رہے ہیں۔ لوگ گندم، آٹا، چینی اور دال کیلیے لائن میں لگے ہوئے ہیں۔
ترک صدر طیب اردگان کا پاکستان آمد پر خیر مقدم کرتے ہیں اور انہیں خوش آمدید کہتے ہیں۔طیب اردگان سے درخواست کروں گا ہمارے وزیراعظم کو بھی سمجھائیں پاکستان کو معاشی مسائل سے کیسے نکالیں۔ ترکی نے ہمیشہ کشمیر فلسطین پر دوٹوک موقف اختیار کیا ہے جس پر ان کے شکر گزار ہیں۔
آئی ایم ایف کیساتھ معاہدے زہر کے نوالے ہیں جو عوام ہضم نہیں کر سکتے۔

یہ بھی پڑھیں

سول سرونٹس کے کیسز پر نظر ثانی اور ان کی ترقیوں کی تجاویز

سول سرونٹس کے کیسز پر نظر ثانی اور ان کی ترقیوں کی تجاویز

اسلام آباد: سی ایس بی نے یکے بعد دیگرے 27 تا 29 جنوری 2020 تک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے