امریکا کو امید ہے کہ طالبان کے ساتھ معاہدہ جلد طے پا جائے گا

امریکا کو امید ہے کہ طالبان کے ساتھ معاہدہ جلد طے پا جائے گا

برسلز: امریکی عہدیدار نے کیا جس سے ایک روز قبل ہی افغان صدر اشرف غنی نے عسکریت پسندوں کے ساتھ بات چیت میں ’قابل ذکر پیش رفت‘ ہونے کا اشارہ دیا تھا

برسلز میں ہونے والے نیٹو کے اجلاس کے بعد امریکی سیکریٹری دفاع مارک ایسپر کا کہنا تھا کہ ’امریکا اور طالبان نے 7 روز کے لیے پرتشدد کارروائیوں میں کمی پر بات چیت کی‘۔
’ہم سب کا یہی کہنا ہے کہ افغانستان کا حل سیاسی سمجھوتہ ہے جو اگر واحد حل نہیں تو سب سے بہترین ضرور ہے، اس سلسلے میں پیش رفت ہوئی ہے اور ہم جلد اس بارے میں مزید بتائیں گے‘۔
امریکی سیکریٹری دفاع نے یہ واضح نہیں کیا کہ عارضی جنگ بندی کا آغاز کب ہوگا جبکہ ایک طالبان عہدیدار نے اس سے ایک روز قبل کہا تھا کہ وہ جمعے سے ’پرتشدد کارروائیوں میں کمی‘ کردیں گے۔
مارک ایسپر کا مزید کہنا تھا کہ ’ہماری نظر میں ابھی 7 روز کافی ہیں لیکن ان تمام باتوں پر عمل کے حوالے سے ہمارا نقطہ نظر حالات پر منحصر ہے، میں ایک بار پھر کہوں کہ حالات پر منحصر ہے‘۔
’اس لیے اگر ہم آگے بڑھے تو جیسے جیسے آگے بڑھتے جائیں گے یہ ایک مسلسل جانچنے کا عمل ہوگا‘

یہ بھی پڑھیں

ڈونلڈ ٹرمپ کا ماؤنٹ رشمور پر خطاب

ڈونلڈ ٹرمپ کا ماؤنٹ رشمور پر خطاب

امریکا: ڈونلڈ ٹرمپ نے چار جولائی یعنی امریکہ کی آزادی کی یاد میں ماؤنٹ رشمور …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے