میزائل پروگرام دفاعی اور فوجی طاقت کا حصہ ہے، ایرانی وزیر دفاع

میزائل پروگرام دفاعی اور فوجی طاقت کا حصہ ہے، ایرانی وزیر دفاع

ایران کے وزیردفاع نے میزائل پروگرام کو ملک کی دفا‏عی اور فوجی طاقت کا اہم حصہ قرار دیا ہے۔

 جمعرات کو تہران میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ایران کے وزیر دفاع بریگیڈیئر جنرل امیر حاتمی کا کہنا تھا کہ ایران کے میزائل صرف اور صرف روائتی ہتھیار لے جانے کے لیے ڈیزائن کیے گئے ہیں۔
انہوں نے واضح کیا کہ ایران کے میزائلوں میں اہداف کو ٹھیک ٹھیک نشانہ بنانے کی صلاحیت بہت اعلی ہے اور امریکیوں نے عین الاسد چھاونی میں اس کا بخوبی مشاہدہ کیا ہے۔
 سپاہ پاسدران انقلاب اسلامی نے امریکہ کے دہشت گردانہ حملے میں قدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلمیانی کی شہادت کا انتقام لینے کے لیے آٹھ جنوری کو عراق میں امریکہ کی سب سے اہم فوجی چھاونی عین الاسد کو میزائلوں کا نشانہ بنایا تھا۔
 ایران کے وزیر دفاع بریگیڈیئر جنرل امیر حاتمی نے سیٹلائٹ راکٹ اور میزائلوں کے درمیان تعلق کے بارے میں کہا کہ، سیٹلائٹ لے جانے والے راکٹوں کا میزائل پروگرام سے کوئی تعلق نہیں اور یہ مکمل طور سے ایک سول پروگرام ہے۔
انہوں نے کہا کہ سیٹلائٹ خلا میں بھیجنا ایران کا مسلمہ حق ہے اور تہران پوری قوت کے ساتھ اپنے خلائی پروگرام کو ترقی دیتا رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں

چین میں کرونا وائرس، امریکی صدر موقع کا فائدہ اٹھانے لگے

واشنگٹن: چین میں کرونا وائرس کے سبب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ موقع کا فائدہ اٹھانے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے