ڈاؤیونیورسٹی نے کروناوائرس کی کٹس درآمدکرلیں

ڈاؤیونیورسٹی نے کروناوائرس کی کٹس درآمدکرلیں

کراچی: ڈاؤیونیورسٹی نے کروناوائرس کی کٹس درآمدکرلیں  در آمدشدہ کٹس جدید ٹیکنالوجی پی سی آر کے طریقہ کار پر ہی استعمال ہوتی ہے، پہلے کروناکے ٹیسٹ کی سہولت صرف این آئی ایچ اسلام آباد میں تھی

ڈاؤویونیورسٹی پہلاہیلتھ کیئرانسٹیٹیوٹ ہے، جہاں کروناوائرس ٹیسٹ کی سہولت موجودہے۔
ڈاؤ یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر محمد سعید قریشی نے چین کے شہر ووہان سے پھیلنے والی وبا نوول کرونا وائرس 2019 کے پیش نظر جنوری کے اوائل میں ہی کوریا سے کرونا وائرس کے ٹیسٹ کی کٹس درآمد کے لیے ہدایت کردی تھی۔
کرونا وائرس 2019 اس وقت دنیا کی سب سے خطرناک بیماری ہے، جس کے ٹیسٹ سخت حفاظتی اقدامات اور مستند طریقہ کار کے بغیر ممکن نہیں ہوسکتے، اس لیے صرف آئسولیشن وارڈ میں رکھے گئے مشتبہ افراد کے ہی ٹیسٹ کیے جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

بین الاقوامی طرز پر کراچی میں ایئر پیوریفائرٹاور لگانے کی تجویز

بین الاقوامی طرز پر کراچی میں ایئر پیوریفائرٹاور لگانے کی تجویز

کراچی: ایئرپیوریفائر ٹاور ہوا سے زہریلی گیس اور مضر صحت مواد کو جذب کر کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے