گھر میں اونچی آواز سے بات کرنے پر آپ مجرم قرار دیے جاسکتے ہیں

گھر میں اونچی آواز سے بات کرنے پر آپ مجرم قرار دیے جاسکتے ہیں

لندن: نوٹس میں بتایا گیا ہے کہ اگر کسی شخص کے گھر میں ہونے والے جھگڑے یا تکرار سے پڑوسی زرا بھی متاثر ہوا تو ایسے شخص (مرد یا عورت) کو پولیس تحویل میں لے گی اور پھر اُس پر 2500 پاؤنڈ (پانچ لاکھ روپے) جرمانہ عائد کیا جائے گا

لندن کی مقامی کونسل کی جانب سے شہری کمیونٹی پروٹیکشن نوٹس جاری کیا گیا جس میں اس بات کو اجاگر کیا گیا ہے کہ اپنے ہی گھر میں تیز آواز سے بات کرنے یا جھگڑا کرنے سے پڑوسی کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
برطانیہ کی سابق وزیراعظم تھریسامے نے 2014 میں اُس وقت یہ حکم نامہ جاری کیا تھا جب وہ وزیر داخلہ کی حیثیت سے امور انجام دے رہی تھیں۔
انہوں نے حکم نامے میں واضح طور پر بتایا تھا کہ قانون کا اطلاق 16 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں پر ہوگا۔
قانون کے مطابق اگر کوئی شہری اپنے گھر میں زور زور سے رورہا یا گفتگو بھی کررہا ہے تو یہ بلدیاتی کونسل کے حکم نامے کی خلاف ورزی ہے۔
برطانیہ میں پہلی بار دسمبر 2015 میں کاؤنسل کی جانب سے ہر گھر پر نوٹس بھیجے گئے تھے جس میں اس بات کو اجاگر کیا گیا تھا کہ وہ اپنے پڑوسیوں کا خیال رکھیں اور انہیں شکایت کا موقع نہ دیں۔

یہ بھی پڑھیں

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

ریاض: سعودی محکمہ موسمیات نے امکان ظاہر کیا ہے کہ ریاض، مدینہ منورہ، بریدہ، نجران، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے