ٹرمپ مواخذے کی دستاویز امریکی سینیٹ کو موصول

امریکی ایوان نمائندگان کے ڈیموکریٹ ارکان نے منگل کے روز ایک سو گیارہ صفحات پر مشتمل رپورٹ سینیٹ کو ارسال کردی ہے جس میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مواخذے کے دلائل پیش کیے گئے ہیں۔

ڈیموکریٹ ارکان کی جانب سے سینیٹ کے نام ارسال کی جانے والی اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے حلف سے روگرادنی کی ہے لہذا سینیٹ ان کا مواخذہ کرکے عہدہ صدارت سے برطرف کرے۔اس رپورٹ میں یہ بات زور دے کر کہی گئی ہے کہ صدر ٹرمپ نے صدارتی حلف کو توڑ کر امریکی عوام کے اعتماد کو بھی ٹھیس پہنچائی ہے لہذا انہیں صدر کے عہدے پر باقی رہنے کا حق نہیں ہے۔رپورٹ میں میں دنیا کے مختلف ملکوں میں تعینات امریکی سفیروں اور اعلی سطحی سیکورٹی اور سول عہدیداروں سمیت درجنوں گواہوں کے بیانات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے یہ بات زور دے کر کہی گئی ہے کہ ٹرمپ نے اپنے اختیارات سے ناجائز استفادہ کیا ہے اور کانگریس کی جانب سے انجام پانے والے تحقیقاتی عمل میں رکاوٹیں بھی ڈالی ہیں۔امریکی ایوان نمائندگان نے بدھ کے روز صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مواخذے کی دستاویز، سینیٹ کو بھجوانے کی منظوری دی تھی۔ٹرمپ کے مواخذے کی تحریک میں اس وقت شدت پیدا ہوئی تھی جب ان کے اور یوکرین کے صدر کے درمیان ہونے والے ٹیلی فونی مکالمے کا معاملہ منظر عام پر آیا تھا جو یوکرین گیٹ کے نام سے مشہور ہے۔صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ برس جولائی کے آخر میں اپنے یوکرینی ہم منصب ولادیمیر زیلنسکی سے ٹیلی فون پر بات چیت کرتے ہوئے، دوہزار بیس کے صدارتی انتخابات میں اپنے اہم ترین حریف جو بائیڈن پر دباؤ ڈالنے کے لیے ان کے بیٹے ہنٹر بائیڈن کے خلاف کیس کو آگے بڑھانے کا مطالبہ کیا تھا۔کہا جارہا ہے کہ ٹرمپ نے یوکرین کے لیے امریکی فوجی امداد کو ہنٹر بائیڈن کے خلاف مالی بدعنوانیوں کے معاملات میں دباؤ ڈالنے سے مشروط کیا تھا۔یوکرین گیٹ اسکینڈل سامنے آنے کے بعد ایوان نمائندگان کی سربراہ نینسی پلوسی نے صدر ٹرمپ کے مواخذے کے عمل کا آغاز کیا تھا۔ مواخذہ کی کارروائی ایوانِ نمائندگان سے شروع ہوتی ہے اور اس کا مقدمہ سینیٹ میں چلتا ہے۔ سینیٹ میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مواخذے کے مقدمے کا باضابطہ آغاز اکیس جنوری سے ہو گا جہاں حمکران جماعت ری پبلکن پارٹی کی اکثریت ہے۔ڈیموکریٹ ارکان کا خیال ہے کہ صدر ٹرمپ نے اب تک جتنے بھی اقدامات انجام دیے ہیں وہ امریکی آئین اور قانون کے منافی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

ہمسایہ ممالک کے ساتھ سرحدوں کی بندش عارضی ہے: ایرانی وزارت خارجہ

ہمسایہ ممالک کے ساتھ سرحدوں کی بندش عارضی ہے: ایرانی وزارت خارجہ

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ ہمسایہ ممالک کے ساتھ ایران …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے