ایرانی صدر کی یورپی ممالک کو دھمکی

ایرانی صدر کی یورپی ممالک کو دھمکی

تہران: ایرانی صدر حسن روحانی نے مشرقِ وسطیٰ میں موجود غیر ملکی افواج کو خطرے کا سامنا کرنے کی دھمکی دے دی۔

عرب خبر رساں ادارے کے مطابق ایرانی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے صدر حسن روحانی نے بیرونی طاقتوں کو مخاطب کیا کہ وہ اپنی افواج مشرقِ وسطیٰ سے نکال لیں، وہ خبر کردار کرتے ہیں کہ اگر افواج خطے میں رہیں تو وہ خطرے میں آسکتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آج امریکی فوج خطرے میں ہے، کل یورپی افواج بھی خطرے میں ہوسکتی ہیں۔

ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ عالمی برادری کے ساتھ مذاکرات مشکل ہونےکے باوجود اب بھی ممکن ہیں، حکومت جنگ یا محاذ آرائی سے بچنے کے لیے روزانہ کی بنیاد پر کام کررہی ہے۔

حسن روحانی نے جامع مشترکہ پلان کے متبادل کے طور پر ’ٹرمپ پلان‘ کی پیشکش کو بھی مسترد کیا اور اسے ایک عجیب پیشکش قرار دیتے ہوئے امریکی صدر پر وعدہ خلافی کرنے کا بھی الزام لگایا۔

یاد رہے کہ برطانوی وزیراعظم بورنس جانسن نے امریکی صدر کو بہترین ڈیل میکر قرار دیا تھا اور ایرانی نیوکلیئر ڈیل کو ٹرمپ ڈیل سے تبدیل کرنے کا کہا تھا۔

 

یوکرینی طیارے کی تباہی ایران کے گلے پڑگئی

یہ بھی پڑھیں

عراق میں امریکہ کے فوجی اڈے پر راکٹ حملہ

عراق میں امریکہ کے فوجی اڈے پر راکٹ حملہ

عراق کے صوبے نینوا کے شہر موصل سے 45 کیلو میٹر کے فاصلے پر واقع …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے