یوکرینی طیارے کی تباہی ایران کے گلے پڑگئی

یوکرینی طیارے کی تباہی ایران کے گلے پڑگئی

لندن: یوکرین کے طیارے پر حملہ کرنا ایران کے لیے مہنگا ثابت ہوا، تہران حکومت کو بھاری معاوضہ دینا پڑے گا۔

تفصیلات کے مطابق یوکرینی طیارے میں کینیڈا، یوکرین، سویڈن سمیت یورپی ممالک کے بھی باشندے سوار  تھے۔ پانچ ممالک نے اپنے شہریوں کو ایران سے معاوضہ دینے کا مطالبہ کردیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق کینیڈا، یوکرین، سویڈن، افغانستان اور برطانیہ کے وزرائے خارجہ نے برطانوی دارالحکومت لندن میں ملاقات کے بعد ایک مشترکہ نیوز کانفرنس کی جس میں سوگوار خاندان کو معاوضہ دینے کا مطالبہ سامنے آیا۔

پریس کانفرنس میں ایران سے مطالبہ کیا گیا کہ مسافر طیارے کی تباہی کے واقعے کی آزادانہ، شفاف اور مکمل بین الاقوامی تحقیقات کرائی جائیں اور اس کے بارے میں متاثرہ اقوام کو بھی تمام دستیاب معلومات سے آگاہ کیا جائے۔

واضح رہے 8 جنوری کو یوکرین کا طیارہ کو تہران میں تباہ ہوا تھا، جس میں 176 افراد ہلاک ہوگئے تھے ، ہلاک ہونے والوں میں ایرانی، کینیڈین اور دیگر ممالک کے شہری شامل تھے۔

یاد رہے ایرانی صدر حسن روحانی کا کہنا تھا طیارے کی تباہی جیسے المناک واقعےکوبرادشت کرنابہت مشکل ہے، واقعے میں ملوث تمام ذمہ دار افراد کو سزائیں دی جائیں گی، خصوصی عدالت اس واقعے کی تحقیقات کرے گی، ایسا نہیں ہے کہ ایک شخص نے ٹریگر دبایا ہو اس واقعے میں اور لوگ بھی ملوث ہیں۔

خیال رہے ایرانی ایرواسپیس کمانڈر علی حاجی زادے نے یوکرین طیارےکی تباہی کی ذمےداری قبول کرتے ہوئے کہا تھا واقعہ پرقوم سے معافی مانگتے ہیں ، یوکرین طیارے کو غلطی سے کروز میزائل سمجھا گیا۔

 

عمان کے نئے سلطان نے ابو ظہبی کے شیخ سے ہاتھ نہیں ملایا

یہ بھی پڑھیں

ترک اور روسی صدر کا ادلب سے متعلق معاہدوں پر عملدرآمد کے عزم کا اعادہ

ترک اور روسی صدر کا ادلب سے متعلق معاہدوں پر عملدرآمد کے عزم کا اعادہ

انقرہ: شام میں روس سے کشیدگی پر ترکی نے امریکا سے پیٹریاٹ میزائل سسٹم خریدنے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے